.
سعودی معیشت

سعودی ولی عہد کا عسیر ریجن کو عالمی سیاحت کا مرکز بنانے حکمت عملی کا اعلان

عسیر کی ترقی سے نئی جاب مارکیٹ اور سیاحتی سرگرمیوں کو فروغ ملے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے عسیر ریجن کو عالمی سیاحتی حب بنانے اور سالانہ ایک کروڑ سیاح لانے کی حکمت عملی جاری کی ہے۔ شہزادہ محمد بن سلمان نے عسیر ریجن کو جدید ترین علاقے میں تبدیل کرنے کا عزم ظاہر کیا ہے۔

نائب وزیراعظم اور اقتصادی وترقیاتی امور کونسل کے سربراہ کی حیثیت سے شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا کہ پورے علاقے کو جدید شکل میں مکمل ترقی یافتہ بنایا جائے گا۔ 50 ارب ریال کا سرمایہ لگانے کا منصوبہ ہے۔ مختلف قسم کے منصوبے نافذ کیے جائیں گے۔ اہم منصوبوں کو فنڈ فراہم کیے جائیں گے۔

عسیر کے پہاڑوں کی چوٹیوں پر سیاحوں کے لیے پرکشش سینٹر قائم ہوں گے۔ ان کی بدولت عسیر سال بھر بین الاقوامی سیاحوں کا مرکز بن جائے گا۔

عسیر کے پہاڑوں کی بادلوں سے اٹکھیلیاں
عسیر کے پہاڑوں کی بادلوں سے اٹکھیلیاں

شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا کہ ’عسیر حکمت عملی کے اجرا کا مقصد یہ ہے کہ پورا علاقہ سال بھر دنیا بھر کے سیاحوں کا مرکز بنا رہے۔ مملکت کے اندر اور باہر سے 2030 تک یہاں سالانہ ایک کروڑ سے زیادہ سیاح آنے لگیں‘۔

عسیر کا علاقہ زبردست سیاحتی عناصر سے مالا مال ہے- ان سب سے فائدہ اٹھایا جائے گا اور یہاں معیاری سیاحتی منصوبے نافذ ہوں گے- یہاں کے ثقافتی اور تاریخی خزانے اجاگر کیے جائیں گے- سعودی ولی عہد نے کہا کہ ’عسیر میں سعودی اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کو ترغیبات دی جارہی ہیں‘۔

انہوں نے کہا ’ان سب کی حصہ داری سے زبردست اقتصادی سرگرمیاں ہوں گی۔ سیاحت اور ثقافت کے کردار کو فروغ دیا جائے گا۔ سیاحتی سرمایہ کاری میں سہولتیں دی جائیں گی‘۔ انہوں نے کہا کہ ’عسیر حکمت عملی پر عمل درآمد سے 2030 تک نئی اسامیاں اور روزگار کے نئے مواقع پیدا ہوں گے۔ زندگی کا معیار بلند ہوگا۔ بنیادی خدمات اور بنیادی ڈھانچہ عمدہ ہو گا۔ مواصلات، صحت اور ٹرانسپورٹ وغیرہ سب عصری ہوں گی‘۔

گورنر عسیر شہزادہ ترکی بن طلال نے عسیر ریجن اور اس کے باشندوں سے مسلسل غیر معمولی دلچسپی لینے اور عسیر ڈیولپمنٹ حکمت عملی جاری کرنے پر ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کا شکریہ ادا کیا ہے۔