ڈیڑھ سال کے تعطل کے بعد سعودی عرب کی مساجد میں دروس قرآن بحال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں کرونا وبا کی وجہ سے مساجد میں بند کی گئی دعوتی اور قرآن کی تدریسی سرگرمیاں ڈیڑھ سال بحال کر دی گئی ہیں۔

سعودی عرب کے وزیر برائے مذہبی امور اور دعوت و ارشاد عبدالطیف بن آل الشیخ نے مملکت بھر کی تمام مساجد میں حلقہ ہائے درس اور تحفیظ القرآن کا سلسلہ بحال کرنے اور خواتین کے قرآن کورسز دوبارہ شروع کرنے کی ہدایت کی ہے۔

مردو خواتین تدریس اور تحفیظ القرآن اپنے اپنے حلقات قرآن میں شرکت کر سکتے ہیں تاہم انہیں صحت کے حوالے سے وضع کردہ ’ایس اوپیز‘ بالخصوص سماجی فاصلے پرعمل درآمد، کرونا ویکسی نیشن لگوانے کی تصدیق اور توکلنا ایپ کے ذریعے اپنی رجسٹریشن کرانا ہوگی۔

وزیر مذہبی امور عبداللطیف بن عبدالعزیز آل الشیخ نے 14 رجب المرجب1441 ھ کو سعودی عرب کی تمام مساجد میں دعوتی، تدریسی اور حفظ قرآن کریم کے تمام پروگرامات تا اطلاع ثانی بند کرنے کا حکم صادر کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں