شاداں وفرحاں آبادی؛سعودی عرب عالمی درجہ بندی میں 25 ویں نمبر پر!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب دنیا کے خوش ممالک کی 2022ء کی سالانہ درجہ بندی میں عالمی سطح پر25 ویں نمبر پررہا ہے۔اس طرح گذشتہ سال کے مقابلے میں اس کا ایک درجہ بڑھ گیا ہے۔

اقوام متحدہ کا پائیدار ترقیاتی حل نیٹ ورک گذشتہ دس سال سے عالمی خوشی (ہیپی نیس) رپورٹ جاری کررہا ہے۔اس میں دنیا کے ممالک کی ان کی آبادی کی خوش حالی اور خوشی کے پیمانوں کی بنیاد پردرجہ بندی کی جاتی ہے۔

رپورٹ کے حاصلات اعدادو شمار کی ایک وسیع رینج پر مبنی ہیں۔نیٹ ورک نے اپنی 2022 کی سالانہ رپورٹ میں کہا ہے کہ اس کی معلومات کا سب سے اہم ذریعہ ہمیشہ ’’گیلپ ورلڈ سروے‘‘ رہا ہے۔

گیلپ ورلڈسروے کے مطابق گیلپ ’’زندگی کی تسکین کی درجہ بندی اور جذباتی تندرستی‘‘کی جانچ کرتا ہے۔اس طرح عالمی خوشی رپورٹ میں اپناحصہ ڈالتا ہے اوراس اہم پہلو کواجاگر کرتا ہے جس کی جی ڈی پی وضاحت نہیں کرتی ہے۔وہ یہ کہ لوگ اپنی زندگیوں کے بارے میں کیسا محسوس کرتے ہیں اوران کی زندگیوں میں کیا کچھ رونما ہو رہا ہے۔

سعودی عرب کی 2017 سے خوشی کی اس عالمی درجہ بندی میں مسلسل بہتری آئی ہے۔اس مستقل پیش رفت کی وجہ وژن 2030 کے اہداف کا حصول ہےاور مختلف شعبوں میں معیارِزندگی کوبہتر بنانے کے لیے ملک کی پیش آیند حالات کے مطابق حسب ضرورت ڈھلنے کی لچکدارصلاحیتیں ہیں۔

2017ء میں خوشی کے اشاریہ میں سعودی عرب 37ویں نمبر پر تھا۔2020ء میں وہ خوش ممالک کی درجہ بندی میں 27ویں نمبر پر آگیا تھا۔2018ء میں وہ خوشی کی عالمی درجہ بندی میں 33ویں نمبرتھا اور 2019ء میں رپورٹ 28 ویں نمبر پرتھا۔

سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق جی ڈی پی، سماجی معاونت،متوقع صحت مند زندگی ، زندگی میں انتخاب کی آزادی کے ساتھ ساتھ سخاوت اور بدعنوانی کا مقابلہ کرنے کے اشاریوں کے لحاظ سے مملکت اس عالمی درجہ بندی میں نمایاں رہی ہے۔

فن لینڈ مسلسل پانچویں سال خوشی کی عالمی درجہ بندی میں پہلے نمبر پررہا ہے۔اس درجہ بندی میں سرفہرست عرب ملک بحرین ہے جو عالمی سطح پر 21ویں نمبر پر ہے۔اس کے بعد متحدہ عرب امارات 24 ویں نمبر پر ہے۔

عراق، ایران اور یمن بالترتیب 107، 110 اور132ویں نمبر پر ہیں۔اقوام متحدہ کی سرپرستی میں فہرست میں سب سے نیچے عرب ملک لبنان تھا جو 146 میں سے 145 ویں نمبر پر تھا جبکہ افغانستان ایک مرتبہ پھر دنیا کا ’’ناخوش ترین ملک‘‘قرار پایا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں