العربیہ خصوصی رپورٹ

سعودی عرب: پہاڑ کے کنارے پر افطار پارٹی کے دل فریب مناظر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں جبل طویق، جسے جزیرہ نماء عرب کی ایک اہم ترین جغرافیائی خصوصیات میں سے ایک اور نمایاں ترین مقام قرار دیا جاتا ہے جسے خلا سے بھی دیکھا جا سکتا ہے، قدرتی خوبصورتی کی بہ دولت اپنی مثال آپ ہے۔

سعودی فوٹوگرافر عبدالرحمٰن البریہ نے چند دوستوں کے ہمراہ جبل طویق کے ایک کنارے پر افطار کا دستر خوان سجایا۔

منفرد تجربہ

فوٹو گرافر البریہ نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ اس نے سودیر کے علاقے میں وادی وراط کے اوپر واقع اس کنارے پر اپنے دوستوں کے ساتھ افطاری کا فیصلہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ اس جگہ کا وقار خود بولتا ہے۔

وہ یہاں اکثر آتے رہتے ہیں کیونکہ یہ جگہ اس کے علاقے کی خوبصورتی کا حقیقی عکس پیش کرتی ہے۔ انہوں نےکہا کہ اس دلفریب جگہ پر افطاری کرنا ایک منفرد تجربہ تھا۔

سدیر کی سب سے بڑی وادی

فوٹو گرافر البریہ نے وضاحت کی کہ وادی وراط صوبہ سدیر کی سب سے بڑی وادیوں میں سے ایک ہے (یہ جگہ ریاض سے 180 کلومیٹر شمال میں واقع ہے) اور قدرتی تنوع کے لحاظ سے سدیر کی وسائل سےبھر پور وادیوں میں سے ایک ہے، جہاں ببول اور سدر کے درخت بکثرت پائے جاتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ وہ تاریخی ورثے، فطرت اور شہروں کی تصویر کشی کرنا پسند کرتے ہیں۔ انہوں نے فوٹو گرافی کے 19 مقامی اور بین الاقوامی ایوارڈز بھی جیتے ہیں۔

مختلف اور متنوع علاقے

انہوں نے مزید کہا کہ مملکت سعودی عرب مختلف اور متنوع خطوں سے مالا مال ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بہت سے فوٹوگرافر سعودی عرب کے ان دلفریب مقامات کی سیر کی خواہش رکھتے ہیں۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے وژن نے فوٹوگرافر کو ایک نیا مقام اور عزت دی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں