بیشترممالک میں عیدالفطر2 مئی کو ہوگی؛یواے ای کے فلکیاتی مرکزکی پیشین گوئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے بین الاقوامی مرکزِفلکیات نے پیشین گوئی کی ہے کہ ان بیشتر ممالک میں عیدالفطر2 مئی کومنائی جائے گی جہاں یکم اپریل سے رمضان المبارک کا آغازہواتھا۔

یواے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق مرکزکے ڈائریکٹرانجینئرمحمد شوکت عودہ نے وضاحت کی ہے کہ 30 اپریل کوشوال کا ہلال دیکھنا ناممکن ہوجائے گا کیونکہ چاند سورج سے پہلے غروب ہوجائے گا۔اس لیے 2 اپریل کورمضان المبارک کا آغاز کرنے والے ممالک یکم مئی کو اس ماہ مقدس کا اختتام کریں گے اور 2 مئی کو ان کے ہاں عیدالفطر منائی جائے گی۔

وہ ممالک،جہاں 3 اپریل کو ماہِ صیام کا آغازہوا تھا؛جیسے پاکستان، بنگلہ دیش، انڈونیشیا، ملائیشیا، برونائی، بھارت، عمان، اردن اور مراکش وغیرہ میں یکم مئی کو شوال کے ہلال رؤیت ممکن ہوگی تاکہ یہ تعیّن کیاجاسکے کہ عیدالفطرکاپہلا دن کب ہے۔اس دن ان ممالک میں 29 واں روزہ ہوگا۔

تاہم عودہ نے کہا کہ یکم مئی کوآسٹریلیا اور آس پاس کے علاقوں میں نئے ہلال کی رؤیت بالکل بھی ممکن نہیں ہوگی۔انھوں نے مزید کہا کہ صرف وسط اور مغربی ایشیا، یورپ کے بیشتر علاقوں اور افریقا کے جنوب میں دوربین کے ذریعے نئے ہلال کی رؤیت ممکن ہوگی۔

ان کی رائے میں زیادہ ترممالک یکم مئی کوعیدِہلال دیکھنے کی کوشش کریں گے اور وہ 2 مئی کو عیدالفطر کا اعلان کرسکتے ہیں۔انھوں نے کہا کہ توقع ہے کہ بھارت، بنگلہ دیش اور پاکستان 3 مئی کو عید کے پہلے دن کے طور پر منائیں گے۔

عیدالفطر کی تقریبات رمضان المبارک کے مقدس مہینے کے اختتام کے بعد برپاہوتی ہیں اور مسلمان مذہبی جوش وخروش اپنی خوشی اظہار کرتے اور اس میں معاشرے کے پسماندہ طبقات کو بھی شریک کرتے ہیں۔ماہ صیام ہلال نظرآنے کی بنیاد پر 29 یا 30 دن تک جاری رہتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں