رمضان کی 27 ویں شب کے موقعے پر مسجد حرام دنیا کی جراثیم سے پاک ترین جگہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

عمومی صدارت برائے امور حرمین شریفین کی طرف سے فراہم کردہ خدمات کے ایک پیکیج کے حصے کے طور پر، رمضان المبارک کے بابرکت مہینے کی 27 رات کو نماز تراویح کے لیے نمازیوں کے استقبال کی تیاری کے لیے پریزیڈنسی کی نمائندہ ایجنسی برائے خدمات، فیلڈ امور اور ماحولیاتی تحفظ کے حصول نے مسجد حرام کے وبائی امراض پر قابو پانے کے لیے 11 روبوٹ فراہم کیے جو جراثیم کے خاتمے کے لیے استعمال کیے جا رہے ہیں۔

شاید یہی وجہ ہے کہ مسجد حرام کو وبائی امراض کے جراثیم کے حوالے سے دنیا کی پاک ترین جگہ قرار دیا رہا ہے۔ اس کے علاوہ رمضان کی ستائیسویں شب کے موقعے پر مسجد حرام کو جراثیم سے پاک کرنے کے لیے 70 سے زیادہ ٹاسک فورسز مقرر کی گئی ہیں۔ اس میں 700 کارکن اور 100 سے زیادہ سپروائزر خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔

یہ کارکن مسجد حرام کے بیرونی صحنوں اور بیت الخلاء کے تمام اطراف کو جراثیم سے پاک کرنے کے لیے چوبیس گھنٹے کام کر رہے ہیں۔ یہ روبوٹ مسجد حرام کے تمام اطراف کو جراثیم سے پاک کرتے ہیں۔ یہ روبوٹ ایک خودکار کنٹرول سسٹم کے ساتھ پہلے سے طے شدہ شیڈول کے مطابق کام کرتے ہیں۔

یہ روبوٹس اعلیٰ کارکردگی والے ایٹمائزیشن یونٹ کے ساتھ SLAM کے لیے مطلوبہ وقت پر آواز کی ترسیل کے ساتھ ابتدائی وارننگ کی خصوصیت سے لیس ہے۔ اس میں بیٹری چارج کرنے کی خصوصیت ہے اور ایک روبوٹ انسانی مداخلت کے بغیر 5 سے 8 گھنٹے تک کام کرتا ہے۔

اس ڈیوائس کی گنجائش 2308 لیٹر ہے جس میں سے ہر گھنٹے میں دو لیٹر استعمال کیا جاتا ہے۔اس سے 600 مربع میٹر دائرے میں بیکٹیریا کو ختم کیا جا سکتا ہے۔ جراثیم کشی کے عمل میں استعمال ہونے والے خشک دھند کے ذرات کا سائز 5 سے 15 مائیکرو میٹرز تک ہوتا ہے۔ روبوٹ کے سامنے کی رکاوٹوں کا پتہ لگانے کی حد 10 میٹر سے زیادہ ہوتی ہےاور ڈیوائس میں ایک کیمرہ ہوتا ہے جس میں اعلیٰ معیار کا میپنگ ریڈار ہوتا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ سمارٹ روبوٹ نے بین الاقوامی سرٹیفکیٹ حاصل کیے ہیں جن میں یورپی سی ای کوالٹی اپروول سرٹیفکیٹ بھی شامل ہے اور خودکار جراثیم کش نظام معتمرین اور نمازیوں کو وائرس سے بچانے اور تمام وبائی امراض کو ختم کرنے کام کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں