.

گوگل کی یورپی یونین کی عدالت سے 1.6 ارب ڈالر کا ٹرسٹ مخالف جرمانہ ختم کرنےکی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

الفابیٹ یونٹ گوگل نے یورپ کی دوسری سب سے اعلیٰ عدالت پرزور دیا ہے کہ وہ تین سال قبل یورپی یونین کے اینٹی ٹرسٹ ریگولیٹرز کی جانب سے آن لائن سرچ ایڈورٹائزنگ میں حریفوں کی راہ میں رکاوٹ ڈالنے پرعاید کردہ 1.49 ارب یورو(ایک ارب 60 کروڑڈالر) کاجرمانہ ختم کرے۔

یورپی یونین نے مقبول ترین انٹرنیٹ سرچ انجن پر مجموعی طور پر تین کیسوں میں بھاری جرمانے عاید کیے ہیں اور یہ یہ معاملہ ان تین میں سے ایک ہے۔گوگل پر یورپی یونین کے ٹرسٹ مخالف عاید کردہ جرمانے کی مجموعی مالیت 8.25 ارب یورو ہے۔

یورپی کمیشن نے 2019ء میں اپنے فیصلے میں کہا تھا کہ گوگل نے اپنے ایڈ سینس پلیٹ فارم کے علاوہ دیگر بروکرز کا استعمال کرنے والی ویب سائٹس کو روکنے کے لیے اپنی بالادستی کا غلط استعمال کیا تھا اور ان کی تلاش کے اشتہارات کو ظاہر نہیں ہونے دیا تھا۔ کمیشن نے کہا کہ گوگل نے اس طرح کےغیر قانونی طریقے 2006 سے 2016ء تک استعمال کیے تھے۔

اس کے بعد گوگل نے لکسمبرگ میں قائم جنرل کورٹ میں یورپی یونین کے فیصلے کو چیلنج کیا تھا۔اب کمپنی پیر سے شروع ہونے والی تین روزہ سماعت کے دوران میں اپنا کیس طے کرے گی۔

گوگل نے ایک عدالتی دستاویز میں کہا ہے کہ یورپی یونین کے مسابقتی نفاذکارکی سرچ انجن کے غلبے کے بارے میں تشخیص اورپھر یورپی کمیشن کا یہ فیصلہ غلط تھا کہ سرچ اشتہارات اورغیرتلاش اشتہارات مقابلہ نہیں کرتے۔

اس نے کمیشن کے اس مؤقف سے اختلاف کیا ہے اور اس کو اپنے جواب میں اٹھایا ہے کہ کمپنی کی خصوصیت، نمایاں جگہ دینے (پریمیم پلیسمنٹ) اور گوگل اشتہارات کی کم سے کم شقیں توہین آمیز ہیں۔

گوگل کوگذشتہ سال اس وقت دھچکا لگاتھاجب وہ چھوٹے یورپی حریفوں پرغیرمنصفانہ فائدہ حاصل کرنے کے لیے اپنی مسابقتی قیمت کی خریداری سروس کے استعمال پر 2.42 ارب یورو کے اینٹی ٹرسٹ فیصلے کے خلاف عدالتی لڑائی ہار گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں