روزانہ کرین بیری کھانے سےعمر بھر یادداشت قائم رہتی ہے:تحقیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

چیزوں کو بھولنے کا فطری رجحان ہماری عمر کے ساتھ ساتھ زیادہ عام ہوتا جاتا ہے۔ مائنڈ یور باڈی گرین کے مطابق جب عمر بڑھنے کی بات آتی ہے تو آپ کے دماغ کی صحت کا فعال طور پر خیال رکھنا ضروری ہے چاہے آپ 20 یا 80 سال کے ہوں اور غذا علمی نتائج کو نمایاں طور پر متاثر کرتی ہے۔

دماغی صحت کے لیے بیر جیسے پولی فینول سے بھرپور پھل نیورو پروٹیکٹو خصوصیات کے لیے مشہور ہیں۔ ایک نئی تحقیق جو فرنٹیئرز ان نیوٹریشن نے شائع کی ہے یہ بتاتی ہے کہ پولی فینول کی سپلیمنٹیشن بھی دماغی صحت کے لیے ان فائٹونیوٹرینٹس کے فوائد حاصل کرنے کا ایک مؤثر طریقہ ہے۔

کرینبیری سپلیمنٹس

اس تحقیق میں 50 سے 80 سال کی عمر کے 60 بوڑھے مرد اور خواتین پر تجربہ کیا گیا۔ شرکاء کا 12 ہفتے تک آغاز اور اختتام پر جائزہ لیا گیا تاکہ یہ دیکھا جا سکے کہ کرین بیری سپلیمنٹیشن نے ان کے ادراک کو کیسے متاثر کیا۔ یعنی یادداشت اور ایگزیکٹو فنکشن، دماغی فنکشن اور نیورل سگنلنگ کے بائیو مارکر پر یہ کیسے اثر انداز ہوا۔

یادداشت کی بہتری

جن شرکاء نے کرینبیری سپلیمنٹس حاصل کیے ان نے بصری ایپیسوڈک میموری میں نمایاں بہتری دکھائی۔ کنٹرول گروپ کے مقابلے میں کچھ کیسا لگتا تھا اس کی تفصیلات کو یاد رکھنے کی صلاحیت میں اضافہ ہوا۔

ایپیسوڈک میموری کا تعلق کسی ایسے واقعے کی تفصیلات کو یاد رکھنے سے بھی ہے جو کسی کی زندگی میں پہلے پیش آیا تھا، چاہے شادی کا دن ہو یا پہلا بچہ۔ نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ کرین بیریزاور خاص طور پر پولیفینول بعد کی زندگی میں یادداشت کو بڑھانے اور برقرار رکھنے میں بڑا کردار ادا کرتے ہیں۔

محققین کا قیاس ہے کہ یاداشت میں بہتری اندرونی ریڑھ کی ہڈی میں خون کے بہاؤ میں اضافے کا نتیجہ ہو سکتی ہے جو ہپپوکیمپس سے معلومات کے داخلے اور باہر نکلنے کا گیٹ وے ہے، جہاں دماغ میں سیکھنے اور یادداشت کی تشکیل ہوتی ہے۔

خراب کولیسٹرول کو کم کرنا

یادداشت پر مثبت اثرات کے علاوہ کرین بیری کی اضافی خوراک نے ایل ڈی ایل کولیسٹرول کو بھی نمایاں طور پر کم کیا۔ اس طرح خون کی نالیوں کی صحت کو فروغ دینے میں بھی یہ پھل معاون ہے۔ اس کے کھانے سے بہتر علمی کارکردگی کے نتائج میں مزید اضافہ ہوتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں