آپ کے پاس 30 سیکنڈ ہیں، ان زیبروں کے درمیان چُھپا جانور دریافت کریں!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوشل نیٹ ورکنگ سائٹس پر بصری واہموں پرمبنی مواد تیزی کے ساتھ پھیلنے کے ساتھ اس میں نئی تصاویر بھی شامل کی جا رہی ہیں۔ اس کی وجہ یہ بھی ہوسکتی ہے کہ انٹرنیٹ پر صارفین اس طرح کی تصاویر میں دلچسپی لیتے ہیں اور انہیں کم وقت میں اپنے دماغ کو متحرک کرنے کا موقع ملتا ہے۔

’بی بی سی‘ نےتصویر نما ایک پہیلی شائع کی جس میں اس نے چیلنج کیا کہ 30 سیکنڈ سے بھی کم وقت میں جنگلی گدھوں [زیبرا] کے گروپ میں چھپے جانور کو کون دیکھ سکتا ہے؟۔

ساتھ ہی یہ کہا گیا کہ جو شخص درمیان میں چھپے جانور کو پہچان لے گا اس کا ’آئی کیو‘ سب سے زیادہ ہوگا۔

انٹرنیٹ صارفین حیران

جب کہ آپٹیکل وہم نے صارفین کو حیران کر دیا۔ تصویر کے آن لائن شیئر ہونے کے بعد صارفین نے جواب تلاش کرنا شروع کر دیا۔

ایک نے تبصرہ کیا کہ "میں کافی دیر تک گھورتا رہا اور بھولنے لگا کہ بیجر کیسا ہونا چاہیے تھا۔"

ایک اور نے کہا کہ "تصویر کو مسلسل گھورنے سے میری آنکھوں میں درد ہونے لگا تھا"۔ اس دوران اس نے اپن گرل فرینڈ کو فون کرکے پوچھا جس نے سکینڈوں میں درمیان میں چھپا جانور بتا دیا۔

ٹک ٹاک پر غصہ

ایک تیسرے نے اس سارے معاملے کو ایک دھوکہ قرار دیتے ہوئے تبصرہ کیا کہ "شاید یہ سب جھوٹ ہے جو لوگوں کو پاگل کر دیتا ہے۔کوئی بیجر نہیں ہے۔بیجر کہاں ہے؟!"

اس کے لیے ٹک ٹاک ایپلی کیشن کے صارفین نے پلیٹ فارم پر تصویر شیئر کرنے کے بعد وہی الجھن محسوس کی، جس میں بہت سے لوگوں نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ بیجر تصویر کے "درمیانی بائیں جانب" پر چھپا ہوا تھا۔

دوسروں کواس پہیلی کو حل کرنا بہت مشکل لگا۔

کیا آپ نے چھپا ہوا جانور ڈھونڈ لیا؟ اور اگر آپ کا جواب ہاں میں ہے تو اس میں آپ کوکتنا وقت لگا؟

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں