العلا: عرب نسل کے نایاب تیندوے کے ہاں دو مادہ بچوں کی پیدائش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں العلا رائل کمیشن نے جنگلی حیات پر تحقیق کرنے والے شہزادہ سعود الفیصل سینٹر میں عرب نسل کے تیندوے کی مادہ کے ہاں دو مادہ بچوں کی ولادت پر اظہار مسرت کیا ہے۔

رائل کمیشن عرب نسل کے تیندوے کو نایاب ہونے سے بچانے کے لیے مربوط پروگرام چلا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جنگلی حیات پر ریسرچ کرنے والے شہزادہ سعود الفیصل سینٹر میں بچوں کی پیدائیش ہوئی۔ سینٹر تیندوے کی افزائش اور محفوظ قومی جنگل میں ان کی آبادکاری کا پروگرام چلا رہا ہے۔

عرب نسل کے تیندوے دنیا بھر میں معدوم ہوتے جا رہے ہیں۔ ان کی تعداد 200 سے زیادہ نہیں ہے۔

تیندوے کی نسل ختم ہونے کی بڑی وجہ قدرتی ماحول کا نہ ملنا ہے۔ گزشتہ برسوں کے دوران غیر قانونی شکار کی وجہ سے بھی ان کی تعداد پراثر پڑا ہے۔

العلا رائل کمیشن عرب نسل کے تیندوے کے تحفظ کے لیے متعدد پروگرام چلا رہا ہے۔ شرعان محفوظ قدرتی جنگل میں عرب نسل کے چیتوں کے سینٹر کے ذریعے چیتوں کی نسل کی افزائش کا پروگرام ہے۔

دوسری جانب عرب نسل کے چیتوں کی فلاح کے لیے ایک فنڈ قائم کیا گیا ہے۔ رائل کمیشن نے اس کے لیے 25 ملین ڈالر کا بجٹ مختص کیا ہے۔

رائل کمیشن متعدد اداروں کی شراکت سے بھی عرب نسل کے چیتوں کے تحفظ کے لیے کام کررہا ہے۔ ان میں عالمی آرگنائزیشن برائے تحفظ قدرتی ماحول، پینتھرا آرگنائزیشن اور کیٹوسفیر آرگنائزیشن کے ساتھ معاہدے قابل ذکر ہیں۔

العلا کوعرب نسل کے چیتوں کا وطن مانا جاتا ہے۔ یہاں متعدد مقامات پر چٹانوں کے نقوش اس تاریخی سچائی کا حقیقی ثبوت ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں