بھیڑوں کے ریوڑ کے مسلسل 12 دن دائرے میں چلنے پر سائنسدان حیران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شمالی چین میں بھیڑوں کے ایک فارم میں بننے والی ویڈیو پر سائنسدان اور ماہرین حیران ہیں۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والے ایک کلپ میں بھیڑ بکریوں کو ایک دائرے میں چلتے دیکھا جا سکتا ہے۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ یہ بھیڑیں مسلسل بارہ دن ایک دوسرے کے پیچھے دائرے میں چلتی رہی ہیں۔

گھڑی کی سوئیوں کی سمت میں مسلسل حرکت

ویڈیو کو دیکھنے کے ساتھ نومبر کے اوائل سے فوٹیج میں شمالی چین میں بھیڑوں کو اپنے باڑے کے اندر گھڑی کی سمت میں گھومتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ حیران کن منظر نے لوگوں کو اُلجھن میں ڈال دیا۔ انہوں نے وائرل ہونے والی ویڈیو میں رویے کو سمجھنے کی کوشش کی۔ بھیڑوں کا مالک اپنے ریوڑ کے رویے سے حیران رہ گیا۔

مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے، محترمہ میاؤ نے کہا کہ سرکلر موومنٹ صرف چند بھیڑوں کے ساتھ شروع ہوئی۔ بعد میں کچھ اوربھیڑیں اس ریوڑ کا حصہ بن گئیں۔ ’سی سی ٹی وی‘ سے فلمائی گئی فوٹیج میں سینکڑوں بھیڑیں ایک دائرے میں ایک دوسرے کے پیچھے چلتی ہوئی دیکھی جا سکتی ہیں۔

دوسری بھیڑیں ایک دائرے کے بیچ میں کھڑی ہیں اور کچھ آخر میں شامل ہونے کا فیصلہ کرتی ہیں۔ دوسرے دائرے کے بیچ میں رہے اور بالکل خاموش رہے۔ یہ پراسرار ویڈیوز 4 نومبر کو اندرونی منگولیا کے شہر باؤتو میں فلمائی گئیں۔

اگرچہ فارم میں 34 بھیڑوں کے باڑےہیں لیکن 13 باڑوں میں صرف بھیڑیں بکھرے ہوئے منظر میں حرکت کر رہی ہیں۔ پتہ نہیں کس چیز نے بھیڑوں کو اس طرح کا برتاؤ کرنے اور اس طرح کا حیران کن شو کرنے پر مجبور کیا۔

ایک بیماری جو جانوروں کو ایسا کرنے پرمجبور کرتی ہے

ماہرین کا کہنا ہے کہ کسی بیماری کی وجہ سے کچھ جانور پریشان دکھائی دیتے ہیں اور گھومنا شروع کر دیتے ہیں۔ Listeriosis دماغ کے ایک حصے کو سوجن کر سکتا ہے اور بھیڑیں متاثر ہو سکتی ہیں اور ان کے ساتھ عجیب و غریب سلوک کرنے کا سبب بن سکتی ہیں۔

پچھلے سال ایسٹ سسیکس میں بھیڑوں نے اسی طرح کا ہنگامہ برپا کیا جب انہیں مرتکز حلقوں میں کھڑا دیکھا گیا۔

تاہم اس بار بھیڑوں کی صبح کی خوراک کھانے کے بعد وہ میدان کے ایک دائرے میں پریڈ کرنے کے لیے آگے بڑھیں۔

سائنس دانوں نے طویل عرصے سے مطالعہ کیا ہے کہ کچھ دوسرے جانور جیسے شارک اور کچھوے سرکلر پیٹرن میں کیوں حرکت کرتے ہیں۔ تاہم وہ ابھی تک کسی نتیجے پر نہیں پہنچے ہیں کہ وہ ایسا کیوں کرتے ہیں؟۔

مقبول خبریں اہم خبریں