فتح کا جشن منانے مراکشی کھلاڑی ماں کو رقص کے لئے میدان میں لے آئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

قطر کے الثمامہ سٹیڈیم میں مراکش، پرتگال کو صفر کے مقابلے میں ایک گول سے شکست دے کر کسی بھی ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں پہنچنے والی پہلی افریقن اور عرب ٹیم بن گئی ہے۔

مراکش ورلڈکپ کے سیمی فائنل میں پہنچنے والی پہلی عرب، پہلی افریقن اور دوسری اسلامی ملک کی ٹیم بن گئی ہے۔ پرتگال کے خلاف اس تاریخی فتح پر مراکشی کھلاڑی نے والدہ کیساتھ گراؤنڈ میں رقص کیا۔دوسری جانب مراکش کے دیگر کھلاڑی گراؤنڈ میں اللہ کے حضور سجدہ ریز ہو گئے۔ قطر میں جاری فیفا ورلڈکپ کے تیسرے کوارٹر فائنل کا اختتام ہو گیا، ٹورنامنٹ کے کوارٹر فائنل میں پرتگال کو مراکش کے ہاتھوں شکست ہو گئی۔
ٹورنامنٹ کی فیورٹس میں شمار کی جانے والی پرتگال کوارٹر فائنل میں مراکش کو زیر کرنے میں ناکام رہی۔ مراکش نے کوارٹر فائنل میں پرتگال کو 0 کے مقابلے میں 1 گول سے شکست دی۔ مراکش نے میچ کے پہلے ہاف میں گول کر پرتگال کے خلاف برتری حاصل کی، جو میچ کے اختتام تک برقرار رہی۔

میچ سے قبل خبریں سامنے آئی تھیں کہ کرسٹیانو رونالڈو کو مراکش کیخلاف کوارٹر فائنل میں بھی میدان میں نہیں اتارا جائے گا، بعد ازاں میچ میں ٹیم کی مشکل پوزیشن کو دیکھتے ہوئے انہیں میدان میں اتار گیا۔ تاہم کرسٹیانو رونالڈو بھی اپنی ٹیم کو شکست سے بچانے میں ناکام رہے۔ میچ کے اختتام پر میدان میں جذباتی مناظر دیکھنے کو ملے، مراکش کے کھلاڑی میدان میں سجدہ ریز ہو گئے، جبکہ اسٹیڈیم میں موجود مراکش کے تماشائی ناصرف خوشی سے نہال دکھے بلکہ کئی شائق جذباتی ہو کر اپنے آنسووں پر قابو نہ رکھ سکے۔

واضح رہے کہ مراکش نے فٹبال ورلڈکپ کے سیمی فائنل میں پہنچنے والے پہلے عرب اور افریقی ملک ہونے کا اعزاز بھی حاصل کر لیا ہے۔ جبکہ 2002 کے فیفا ورلڈکپ کے بعد پہلی مرتبہ کوئی اسلامی ملک ورلڈکپ کے سیمی فائنل میں پہنچنے میں کامیاب ہوا۔ 2002 فیفا ورلڈکپ میں ترکی سیمی فائنل تک پہنچنے میں کامیاب ہوا تھا۔ پرتگال کیخلاف فتح کے بعد اب مراکش سیمی فائنل میں فرانس اور انگلینڈ کے کوارٹر فائنل کی فاتح ٹیم سے ٹکرائے گی، جبکہ ٹورنامنٹ کے دوسرے سیمی فائنل میں ارجنٹینا اور کروشیا کی ٹیموں کا آمنا سامنا ہو گا۔

مراکش شمالی افریقہ کا مسلم اکثریتی ملک ہے اور اس کی جیت پر عرب دنیا میں بھی اس وقت جشن کا سماں دیکھنے میں آ رہا ہے۔ اس جشن کی جھلک سوشل میڈیا پر بھی نظر آ رہی ہے۔

سوشل میڈیا صارفین ٹوئٹر پر مراکش کے شہر کاسابلانکا میں جشن کی ویڈیوز بھی شیئر کرتے رہے۔ مراکش کی جیت پر گراؤنڈ میں بیٹھے افراد بھی خوشی سے جھومتے رہے اور عرب دنیا سے محبت کا اظہار کرتے رہے۔

میچ جیتنے کے بعد اشرف حکیمی ایک بار پھر شائقین میں بیٹھی اپنی والدہ کی طرف بھاگتے ہوئے نظر آئے اور جا کر ان کا پیار لیا۔

مراکش کی جیت کے بعد ان کے کھلاڑی سفیان بوفال اپنی والدہ کو گراؤنڈ میں لے آئے اور ان کے ساتھ والہانہ انداز میں ناچتے ہوئے جیت کا جشن منایا، جسے صارفین نے بہت پسند کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size