مراکشی فٹ بالر سفیان بوفال کی والدہ کے انتقال کی افواہ جھوٹی نکلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قطر میں ہونے والے ورلڈ کپ میں مراکشی کھلاڑی سفیان بوفال کی والدہ کی وفات کی خبر سوشل میڈیا پر جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی مگر یہ ایک افواہ تھی جس میں کوئی صداقت نہیں تھی۔ سوشل میڈیا پر چند گھنٹوں کے دوران مراکش کے شہر تازہ میں ان کی موت کی خبر سامنے آئی جس پر ان کے بچوں کی جانب سے حقیقت واضح کرنے کے لیے فوری ردعمل دیا گیا۔

بوفال کے دو بھائیوں نے اپنے "انسٹاگرام" اکاؤنٹ کے ذریعے اپنی والدہ کی موت کی افواہ کی تردید کی اور ایک تصویر شائع کی جس میں لکھا تھا "الحمد للہ ماں خیریت سے ہیں اور آپ کے پیغامات کا شکریہ۔"

مراکشی کھلاڑی کی والدہ کے بارے میں ان افواہوں کی تردید ہو گئی ہے جو مراکش کی قومی فٹ بال ٹیم کے کھلاڑیوں اور ان کی ماؤں نے رباط کے شاہی محل میں شاہ محمد ششم کی طرف سے منعقدہ ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں پہنچنے کے بعد استقبالیہ سے غیر حاضر تھیں۔

علاوہ ازیں باخبر ذرائع نے بتایا کہ مراکش کے بین الاقوامی کھلاڑی سفیان بوفال کی والدہ قطری دارالحکومت دوحہ سے پیرس پہنچی ہیں۔ انہوں نے سرجری کی کامیابی کے بعد ان کی موت کی خبروں کی یکسر تردید کی ہے۔

بوفال کے بھائیوں کا پیغام
بوفال کے بھائیوں کا پیغام

بوفال کی والدہ کو 2022 کے قطر میں ہونے والے ورلڈ کپ میں مراکش کی قومی ٹیم کی شرکت کے بعد وسیع شہرت ملی، جہاں مراکش کی ٹیم کی شاندار کارکردگی اور گذشتہ ہفتے ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں پہنچنے کے بعد بوفال کے ساتھ میدان میں تصاویر اور مختصر ویڈیو کلپس سامنے آئیں۔

مراکش نے قطر میں ہونے والے ورلڈ کپ کے فائنل میں چوتھی پوزیشن حاصل کی۔ وطن واپسی کے بعد ایئرپورٹ کے اندر اور باہر ہزاروں افراد نے ٹیم کا شاندار استقبال کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں