اردن : پلاسٹک کی بندوق سے منی ایکسچینج شاپ پر ڈکیتی کی عجیب واردات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن میں الزرقاء گورنریٹ میں منی ایکسچینج کی دکانوں میں اس وقت ایک عجیب ڈکیتی کا مشاہدہ کیا گیا جب دو افراد سٹور سے رقم چوری کرنے میں ناکام رہے۔ کہانی کے حالات اس وقت شروع ہوئے جب اردن کے دارالحکومت عمان کے شمال مشرق میں واقع الزرقاء گورنریٹ میں ترسیلات زر اور کرنسی کی منتقلی اور تقسیم کرنے والے ایک سٹور پر دو افراد نے دھاوا بول دیا۔ سٹور کے کیمرہ سے ریکارڈ کی گئی ویڈیو میں ڈاکوؤں میں سے ایک کے گرنے اور عدم توازن کا شکار ہونے کو فلمایا گیا ہے۔ اس دوران غالبا دونوں ڈاکوؤں کے منصوبوں میں بھی فرق نظر آیا۔

Advertisement

اردن کے پبلک سیکیورٹی ڈائریکٹوریٹ کے میڈیا ترجمان کرنل عامر السرتاوی نے بتایا کہ الزرقا ء پولیس ڈائریکٹوریٹ کو اطلاع ملی تھی کہ دو نامعلوم افراد نے ایک ایکسچینج شاپ کو دھمکیاں دے کر لوٹنے کی کوشش کی لیکن وہ ناکام رہے۔ ڈکیتی میں ناکامی پر دونوں نے دکان کو آگ لگا دی اور وہاں سے فرار ہو گئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اطلاع ملنے اور جائے وقوعہ سے معلومات اکٹھی کرنے کے فوراً بعد دونوں افراد اور ان کے قبضے میں موجود گاڑی کی تفصیلات جاننے کے لیے سسٹم کو متحرک کردیا گیا۔ جائے وقوعہ کے اطراف میں گشت بڑھا دیا گیا اور اس علاقے کے باہر نکلنے کے مقامات پر بھی سکیورٹی بڑھا دی گئی۔

میڈیا ترجمان نے بتایا کہ جرم کے ارتکاب کے فوری بعد فوجداری تفتیشی گشتی ٹیم نے ایک مشکوک گاڑی کو دیکھا۔ سواروں سے پوچھ گچھ کرنے پر انہوں نے ڈکیتی کی مشترکہ منصوبہ بندی کرنے کا اعتراف کرلیا۔ معلوم ہوا ان کے پاس پلاسٹک کا پستول تھا ۔ انہیں حراست میں لے لیا گیا ۔ تاہم وہ کوئی بھی رقم چوری کرنے میں ناکام رہے اور وہ دکان کو آگ لگا کر فرار ہو گئے تھے ۔ اب انہیں ریاستی سلامتی عدالت کے پبلک پراسیکیوٹر کے پاس بھیج دیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں