ملبے میں دبے افراد کب تک زندہ رہ سکتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ترکیہ اور شام میں آنے والے تباہ کن زلزلے کے بعد تاحال دبے افراد کی تلاش کے دوران یہ سوال اہم ہے کہ کون سے عوامل بچاؤ میں معاون ہوں گے؟

زلزلے کے بعد ملبے تلے دبے افراد کب تک زندہ رہ سکتے ہیں؟ ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک ہفتہ یا اس سے زیادہ وقت تک، لیکن یہ ان کے زخموں کی نوعیت، موسم اور اس بات پر منحصر ہے کہ وہ کیسے دبے ہوئے ہیں۔

بچاؤ کا امکان تباہی کے بعد پہلے 24 گھنٹوں میں زیادہ ہوتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اس کے بعد، ہر گزرتے دن کے ساتھ زندہ رہنے کے امکانات کم ہو جاتے ہیں۔ بہت سے متاثرین پتھروں یا دیگر ملبے کے گرنے سے بری طرح زخمی یا دب گئے ہوتے ہیں۔

سانس لینے کے لیے ہوا اور پانی تک رسائی بھی اہم عوامل ہیں۔

شام اور ترکیہ میں درجہ حرارت نقطہ انجماد سے کافی نیچے گر گیا ہے اور سردی کے باعث امدادی سرگرمیاں سست ہوگئی ہیں۔

میساچوسٹس جنرل ہسپتال میں ایمرجنسی اور آفات میڈیسن کے ماہر ڈاکٹر جارون لی کا کہنا ہے کہ "عام طور پر، پانچ سے سات دن کے بعد زندہ بچ جانے والوں کو تلاش کرنا بہت کم ہوتا ہے، اور زیادہ تر ریسکیو ٹیمیں اس وقت تک رکنے پر غور کریں گی۔"

"تاہم بعض واقعات میں لوگ سات دن کے بعد بھی زندہ پائے گئے ہیں۔ بدقسمتی سے، یہ نایاب اور غیر معمولی معاملات ہیں۔"

نارتھ ویسٹرن یونیورسٹی کے فینبرگ میڈیکل اسکول کے ایمرجنسی میڈیسن کے ماہر ڈاکٹر جارج چیمپاس نے کہا کہ تکلیف دہ زخم ، بشمول اعضاء کٹنے اور کچلے جانے کی تکلیف میں مبتلا افراد کو بقا کے لیے زیادہ مشکل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

"ایسے زخمیوں کے لیے پہلا ایک گھنٹہ بہت اہم ہوتا ہے۔ اگر آپ انہیں ایک گھنٹے میں نہیں نکالتے، تو واقعی زندہ رہنے کا امکان بہت کم ہے۔"

وقت گزرنے کے ساتھ دیگر بیماریوں میں مبتلا افراد، جن کی صحت کا انحصار دوائیوں پر ہے ، کے لیے بھی امکانات کم ہو جاتے ہیں۔ عمر، جسمانی اور ذہنی حالت سب اہم ہیں۔

یونیورسٹی آف کیلیفورنیا، سان فرانسسکو کے ایمرجنسی میڈیسن کے ماہر ڈاکٹر کرسٹوفر کول ویل نے کہا، "آپ بہت سے واقعات میں دیکھتے ہیں کہ کچھ لوگ واقعی معجزانہ طور پر خوفناک حالات میں زندہ بچ جاتے ہیں۔"

"وہ زیادہ تر نوجوان ہوتے ہیں اور خوش قسمتی سے انہیں ملبے میں کوئی محفوظ ٹھکانہ مل جاتا ہے یا ہوا اور پانی جیسے ضروری عناصر تک رسائی ہوتی ہے۔"

2011 کے جاپان میں آنے والے زلزلے اور سونامی کے بعد، ایک نوجوان اور اس کی 80 سالہ دادی اپنے چپٹے گھر میں نو دن تک پھنسے رہنے کے بعد زندہ پائے گئے۔

ایک سال پہلے، ہیٹی کی ایک 16 سالہ لڑکی کو 15 دن کے بعد پورٹ-او-پرنس میں زلزلے کے ملبے سے بچا لیا گیا تھا۔

ذہنی حالت بھی بچاؤ کے عمل کو متاثر کر سکتی ہے۔ چیمپاس کے مطابق " لاشوں کے پاس پھنسے ہوئے لوگ، جن کا دوسرے زندہ بچ جانے والوں یا بچانے والوں سے کوئی رابطہ نہیں ہے، وہ زندہ رہنے کی امید چھوڑ سکتے ہیں۔"

تاہم ’’اگر ان کے پاس کوئی زندہ شخص ہے تو زندگی کی جنگ لڑتے رہنے میں وہ ایک دوسرے پر انحصار کرتے ہیں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں