آفٹر شاک بدتر ہوسکتا، ماہرین نے گھر کے محفوظ مقامات کی نشاندہی کردی

گھر کے اندر پناہ لینے کے لیے بہترین اور بدترین مقامات کون کون سے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ماہرین نے کہا ہے کہ کسی بھی خطرناک زلزلہ کے بعد اس کے آفٹر شاکس بھی بدتر ہوسکتے ہیں۔ لہذا اس حوالے سے بھی الرٹ رہنا ضروری ہوتا ہے اور کسی بھی زلزلہ کے بعد آفٹر شاکس سے بچنے کے لیے احتیاطی تدابیر سے آگاہ ہونا اہم ثابت ہوسکتا ہے۔ اسی حوالے سے کسی بھی گھر میں موجود زلزلہ سےمتعلق بہترین اوربدترین مقامات کا علم فائدہ مند ثابت ہوسکتا ہے۔ ماہرین نقصان سے بچنے کے لیے گھر کی خطرناک ترین مقامات اور محفوظ ترین مقامات کی نشاندہی کی ہے۔

زلزلوں کے دوران سب سے محفوظ جگہ عمارتوں کے باہر، درختوں اور عمارتوں سے دور ہوتی ہے۔ تاہم زلزلے اچانک آتے ہیں اور انسان جلدی جلدی باہر نہیں نکل پاتا تو اس کے لیے گھر کے اندر پناہ لینا ضروری ہوجاتا ہے۔

زلزلوں کے دوران اگر کوئی شخص جلدی سے باہر نہیں نکل سکتا تو اسے ہلنے کی شدت سے چند سیکنڈ پہلے گھر کے اندر ہی اپنی حفاظت کا انتظام کرنا چاہیے۔ سب سے اہم بات زلزلہ کے دوران فوری اور درست فیصلہ کرنا ہے۔ ویب سائٹ "socratic.org" کے مطابق زلزلہ کے دوران پناہ لینے کی بہترین مقامات میں

سب سے پہلے عمارت کے داخلی راستے ہیں۔ ان کے بعد بوجھ برداشت کرنے والی سپورٹ والے مقامات آتے ہیں۔ تیسرا آپشن سخت فرنیچر جیسے ڈیسک یا بیڈ کے نیچے کے مقامات ہیں۔ بدترین مقامات کو دیکھیں تو چھت کے نیچے کمرے کا وسط نقصان کے حوالے سے خطرناک ترین مقام ہے۔ دوسرا خطرناک ترین مقام فرنیچر کے بھاری ٹکڑے کے ساتھ والا مقام ہے۔ یہاں کھڑے ہونے سے فرنیچر ٹوٹ کر گر سکتا ہے۔ تیسرا بدترینمقام کھڑکیوں اور برقی آلات کے ساتھ موجود جگہ ہے۔ یہاں کھڑا ہونا بھی زیادہ نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں