دیکھیے، شامی بچہ ترکیہ میں سعودی امدادی ٹیم کے لیے رضاکار مترجم بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ذرائع ابلا غ کی ویب گاہوں نے ترکیہ میں سعودی امدادی ٹیم کے لیے رضاکارانہ مترجم کے طور پر کام کرنے والے ایک شامی بچے کی زبردست پذیرائی دی ہے۔ اس شامی بچے کی ویڈیو کلپ کو بڑے پیمانے پر شیئر کیا جارہا ہے۔
ویڈیو کلپ میں دکھایا گیا ہے کہ 13 سالہ احمد ترکیہ کے زلزلہ زدہ علاقوں میں سعودی امدادی ٹیم کے کام میں سہولت فراہم کرنے کے لیے رضاکارانہ طور پر کام کر رہا ہے۔

Advertisement

سعودی امدادی ٹیم نے اخلاق، ذہانت اور امدادی ٹیم کے کام کو آسان بنانے کے لیے مسلسل تعاون کرنے پر شامی بچےاحمد کی خدمات کو سراہا ہے۔ یاد رہے کہ سعودی ٹیم نے گزشتہ جمعہ سے ترکیہ میں آنے والے تباہ کن زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں کام شروع کیا تھا۔

کنگ سلمان ریلیف سنٹر نے جمعرات کو اعلان کیا تھا کہ زلزلے سے متاثر ہونے والوں کے لیے چلائی گئی مہم میں 145 ملین ریال جمع ہو گئے ہیں۔ مرکز کی ٹیمیں رکاوٹوں کے باوجود متاثرہ لوگوں تک امداد پہنچانے کے لیے پر عزم ہیں۔\

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size