کیمرے اور الیکٹرانک چپ سے لیس کبوتر بھارت کو پریشان کرنے لگا

اڑیسہ میں ماہی گیروں نے پکڑا، کیمرے اور الیکٹرانک چپ منسلک تھا، فرانزک جانچ کی جائیگی: بھارتی پولیس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارتی میڈیا نے 10 دن قبل کونارک کے ساحل سے تقریباً 35 کلومیٹر دور لنگر انداز ہونے والے ماہی گیروں کے کبوتر کو تلاش کرنے کے متعلق خبر شائع کی جس نے بہت سے لوگوں کو حیران کر دیا۔ بعض افراد نے اس کا مذاق بھی اڑایا۔

واضح رہے کہ ایک کبوتر اڑیسہ کے جگت سنگھ پور ضلع میں پارادیپ کے ساحل سے مچھلی پکڑنے والی ایک کشتی سے پکڑا گیا ہے۔ اس کبوتر کے ساتھ کیمرے اور الیکٹرانک چپ منسلک تھی۔ پولیس نے شبہ ظاہر کیا ہے کہ کبوتر جاسوسی میں استعمال ہو رہا تھا۔

کچھ ماہی گیروں کو یہ کبوتر چند روز قبل اپنی کشتی پر ملا تھا۔ ماہی گیروں نے بدھ کو اس پرندے کو پکڑ کر میرین پولیس کے حوالے کر دیا تھا۔

جگت سنگھ پور کے پولیس سپرنٹنڈنٹ راہول نے بتایا کہ ویٹرنرین ڈاکٹر پرندے کا معائنہ کریں گے۔ ہم کبوتر کی ٹانگ سے منسلک آلات کی جانچ کرنے کے لیے فرانزک لیبارٹری کی مدد حاصل کریں گے۔ یہ آلات ایک کیمرہ اور مائکروچپ لگتے ہیں۔

راہول نے کہا کہ پولیس ماہرین کی مدد لے گی تاکہ پرندوں کے پروں پر نامعلوم زبان میں لکھی گئی تحریر کو پولیس کے لیے مقامی زبان میں بیان کیا جا سکے۔

ماہی گیری کی کشتی کے ایک ملازم سارتھی نے بتایا کہ میں نے کبوتر کو کشتی پر دیکھا۔ پھر اچانک دیکھا کہ کچھ اوزار پرندے کی ٹانگوں سے جڑے ہوئے تھے۔ چیک کرنے پر یہ بھی معلوم ہوا کہ اس کے پروں پر کچھ لکھا ہوا تھا۔ میں اسے سمجھ نہیں سکا کیونکہ یہ مقامی زبان میں نہیں تھا ۔پرندہ قریب آتے ہی پکڑا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں