عالمی مقابلہ ’’عطر الکلام‘‘ میں امریکی نے تلاوت کے معیار سے سامعین کو حیران کردیا

سعودی عرب میں پروگرام’’ عطر الکلام‘‘ میں یاسر شاہین نے اپنی والدہ کی خواہش پوری کرنے کے لیے قاری بننے کے لیے اپنی انتھک جستجو سے آگاہ کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ہالی ووڈ فلم اور ٹیلی ویژن کے سکرین رائٹر فلسطینی نژاد امریکی یاسر شاہین نے سعودی انٹرٹینمنٹ اتھارٹی کے پروگرام "عطر الکلام" کی حالیہ قسط میں ایک ایسی آواز میں تلاوت پیش کی جس نے سامعین کو حیران کردیا ۔ انہوں نے ممتاز انداز میں شاندار قرآنی معانی سے کانوں کو مسحور کر دیا۔

ریاض میں جاری تلاوت قرآن کریم کے سب سے بڑے عالمی مقابلہ پر مبنی پروگرام ’’عطر الکلام‘‘ نے اپنی آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ پر امریکی قاری یاسر شاہین کی کہانی پر مبنی ویڈیو کلپ پیش کیا۔ اس کلپ میں قار ی یاسر نے اپنی والدہ کے پر تاثیر الفاظ کے متعلق بتایا جس میں کہا ماں نے ان کے قاری بننے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔ انہوں نے کہا پھر اس خواہش کی تکمیل میں نے ساری زندگی قاری بننے کی کوشش کی ۔

عالمی مسابقہ قرآن و اذان میں تلاوت کے زمرے میں شریک یاسر نے مزید کہا میری زندگی قرآن کو حفظ کرنے، اس کی تلاوت کرنے اور ہالی ووڈ کے گلیاروں میں سکرپٹ لکھنے کے درمیان گزری۔ میں نے 130 سے زیادہ دستاویزی پروگراموں اور 14 دستاویز فلموں کی تیاری کی نگرانی کی۔ عرب اور اسلامی ممالک کے ٹیلی ویژن چینلز پر متعدد پروگراموں میں حصہ لیا۔

انہوں نے مزید بتایا میں ایک بہت ہی شرارتی بچہ تھا۔ میں مٹھائیاں خریدنے کے لیے اپنی ماں سے کچھ پیسے چوری کرتا تھا ۔ ایک دن ماں نے میری چوری پکڑ لی ۔ وہ گھر سے نکلی اور ایک گھنٹے بعد واپس آئیں تو ان کے ہاتھ میں قاری محمد البراک کی تلاوت کی ٹیپ کیسٹ تھی۔ ماں نے مجھے کہا کہ مجھے خدا سے امید ہے کہ ایک دن میں اس جیسا بن جاؤں گا۔ کئی سال گزر گئے اور اللہ نے میری والدہ کی خواہش کو پورا کردیا۔ میں سمجھتا ہوں میں نے اپنی استطاعت کے مطابق اپنی والدہ کا اکرام کیا ہے۔

یاسر شاہین نے کہا میں نے خود کو تعلیمی کاموں میں مصروف کیا۔ میں نے کیلیفورنیا کی سان ہوزے یونیورسٹی میں فیکلٹی ممبر کے طور پر کام کیا اور متعدد مقابلوں میں حصہ لیا جس کی وجہ سے میں ’’ عطر الکلام‘‘ پروگرام تک پہنچ گیا۔ اور عالمی قرآنی آوازوں میں سے ایک بن گیا۔

یاسر شاہین نے اپنے عظیم تخیل کی بدولت فلم سازوں کو ان کی پسندیدہ مہارتوں میں کام دیا۔ یاسر نے ایسے علاقوں میں پروگراموں میں بھی شرکت کی جس تک پہنچنے میں بہت سے عرب نژاد امریکی محروم رہے۔ یہ عالمی تجربات یاسر کی زندگی کا حصہ بن گئے۔ یاسر نے ٹیکساس میں ڈیلاس کی مساجد میں مسلمان بچوں کو قرآن کی آیات اور لہجے کے اصول سکھانے کی خدمت بھی انجام دی۔

واضح رہے ’’ عطر الکلام‘‘ رمضان کے ٹی وی پروگراموں میں سب سے نمایاں پروگرام ہے۔ اس میں دنیا بھر سے افراد کو وحی کے کلمات کی تلاوت اور اذان کے لیے مدعو کیا جاتا ہے۔ اس مسابقہ میں جیتنے والوں 12 ملین ریال کے انعامات سے نوازا جائے گا۔

مسابقہ کے پہلے مرحلہ میں پوری دنیا سے 50ہزار سے زیادہ افراد نے حصہ لیا۔ آخری مرحلہ میں 50 افراد کو منتخب کیا گیا ہے۔ یہ افراد تلاوت اور اذان کی دو کیٹگریز میں مسابقہ میں حصہ لے رہے ہیں۔ ہر کیٹگری میں پہلے دس پوزیشنز پر آنے والوں کو نقد انعام دیا جائے گا۔ تلاوت قرآن کریم کی کیٹگری میں پہلی پوزیشن پر آنے والے کے لیے 30 لاکھ ریال انعام ہے۔ اذان میں پہلی پوزیشن لینے والے کو 20 لاکھ ریال انعام سے نوازا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں