’’ 30 ریال کیوں؟‘‘ مکہ مکرمہ میں سکیورٹی اہلکار کی ٹیکسی کرایہ کم کرا کر معتمر کی مدد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوشل میڈیا پر متحرک کارکنوں نے ایک اور ویڈیو کلپ پر بڑے پیمانے پر رد عمل کا اظہار کیا ہے۔ اس ویڈیو کلپ کو بڑے پیمانے پر شیئر کیا گیا۔ ویڈیو مکہ مکرمہ میں ایک سکیورٹی اہلکار کی ہے جو منفرد انداز میں معتمرین میں سے ایک کی مدد کرتا دکھائی دیا۔

سیکورٹی مین نے غیر ملکی عازمین عمرہ کی ٹیکسی کا کرایہ طے کرنے کے لیے مذاکرات کرکے کرایہ کم کرا کر مدد کر دی۔

سکیورٹی اہلکار قیمتوں میں اضافہ نہ کرنے کے لئے مذاکرات کرنے میں مدد کرتا نظر آیا۔ سیکورٹی والے نے ٹیکسی ڈرائیور سے بات کی اور اس سے حاجیوں کی نقل و حمل کی قیمت کے بارے میں بحث کی اور ڈرائیور سے کہا "کتنے پیسے؟.. 30 کیوں؟... وہاں کا کاؤنٹر تو 10 ریال ہے‘‘اس کے بعد سکیورٹی اہلکار نے غیر ملکی سے ٹیکسی میں سوار ہونے کے لیے کا کہا اور اسے زور دے کر کہا کہ اسے 10 ریال ادا کرنا ہوں گے۔ گارڈ نے مسجد حرام کے اطراف مقامات کو دیکھنے کے لیے جانے والے غیر ملکی معتمر کو زیادہ کرایہ ادا کرنے سے بچا لیا۔

واضح رہے سعودی عرب میں سکیورٹی اہلکار رمضان کے بابرکت مہینے میں معتمرین اور خانہ کعبہ کی زیارت کرنے والوں کی خدمت کے لیے زبردست کوششیں کرتے دکھائی دیتے ہیں۔ وہ ایک طرف زائرین کی حفاظت کو برقرار رکھتے ہیں تو ساتھ ہی ضرورت مندوں اور بوڑھوں کی مدد بھی کردیتے ہیں۔ آنے والوں کو رہنمائی کرتے ہیں ۔ ان کی نقل و حرکت کو آسان بنانے میں بھی مدد کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں