سعودی تاریخی مساجد کی بحالی کا منصوبہ، ’’مسجد النجدی‘‘ کا حسن بھی لوٹ آیا

شہزادہ محمد بن سلمان کے پروجیکٹ کے تحت فرسان کی تاریخی مسجد کی تزئین و آرائش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب میں شہزادہ محمد بن سلمان کا تاریخی مساجد کی بحالی کے منصوبہ نے فرسان میں مسجد النجدی کی تزئین و آرائش کرکے اس کے فن تعمیر کے حسن کو لوٹا دیا ہے۔

تاریخی مساجد کی بحالی کے منصوبے کے دوسرے مرحلہ میں سعودی عرب کے 13 خطوں میں 30 مساجد کو از سر نو تعمیر و بحال کرنے کے لیے چنا گیا تھا۔

مسجد النجدی قدیم ترین تاریخی مساجد میں سے ایک ہے۔ اس کی تعمیر 1347 ہجری سے شروع ہوئی اور یہ جازان میں جزیرہ فرسان کے مرکز میں واقع ہے۔ تعمیر کی تجدید کے مرحلے میں مسجد میں پودوں کی سجاوٹ کو بحال کیا گیا، فنکارانہ بناوٹوں اور شیشے کے خالی مقامات کے ذریعہ مسجد کے فن تعمیر کی جمالیات کو دوبارہ زندہ کردیا گیا۔ یہ سجاوٹ اس کی روایتی تعمیراتی انداز میں سے سب سے اہم جزء ہے۔ یہ تعمیر کئی ملکوں کے فن تعمیر اور فنون کو اپنے اندر سموئے ہوئے تھی۔ مختلف ملکوں سے تجارتی دوروں کے ساتھ ساتھ ذرائع ابلاغ کے ذریعے دنیا بھر کا فن تعمیر اس خطے میں پہنچا۔ ان ذرائع ننے عمارت کی مختلف تکنیکوں اور شہری نمونوں کی منتقلی میں اہم کردار ادا کیا۔

مسجد النجدی کا نام شیخ ابراہیم التمیمی کے نام سے جانا جاتا ہے۔ شیخ ابراہیم کو "النجدی" کہا جاتا ہے۔ انہوں نے اس مسجد کی بنیاد رکھی تھی ۔ شیخ ابراہیم حوطہ بنی تمیم سے تھے اور پرانے وقتوں میں فرسان منتقل ہوئے تھے۔ وہ موتیوں کی تجارت کا کام کرتے تھے اور اکثر ہندوستان کا سفر کرتے تھے۔ اس مسجد کی تعمیر میں 13 سال لگے تھے۔ اس میں لگائی گئی پینٹنگز اور فنی نمونے اور نوشتہ جات ہندوستان سے لائے گئے تھے۔

’’النجدی‘‘ مسجد کی نئی تعمیر اور بحالی کے بعد اس کا رقبہ 609.15 مربع میٹر ہوگا ۔ اس کی گنجائش 245 نمازیوں سے بڑھ کر 248 نمازیوں تک پہنچ جائے گی۔ اس کے منبر اور محراب کی خوبصورتی میں قدرتی رنگوں میں رنگے ہوئے پودوں کی سجاوٹ بھی شامل ہے۔ اس میں وہ محراب بھی نمایاں ہیں جن پر ایک منفرد طرز تعمیر کے آرائشی اور رنگین گنبدوں والی چھت کو بنایا گیا ہے۔ اس مسجد کے 12 گنبد ہیں۔ مسجد میں پتھر کا استعمال کیا گیا ہے۔ مقامی قدرتی مواد کو تعمیر میں استعمال کیا گیا ہے۔ مسجد کی خصوصیت یہ بھی ہے کہ اس میں اسلامی فن تعمیر کے زیادہ تر تعمیراتی عناصر کو شامل کردیا گیا ہے۔

یاد رہے شہزادہ محمد بن سلمان کے تاریخی مساجد کی بحالی کے منصوبے کے دوسرے مرحلہ میں ’’ النجدی‘‘ مسجد کی تزئین کی گئی ہے۔ اس منصوبے کے پہلے مرحلہ میں سعودی عرب کے 10 خطوں میں 30 تاریخی مساجد کو از سر نو بحال کیا جا چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں