پیرس کے شہریوں کی اکثریت کاکرائے پردستیاب برقی اسکوٹرزکوہٹانے کے حق میں ووٹ

یکم ستمبر سے پیرس میں سیلف سروس اسکوٹر نہیں ہوں گے:میئر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پیرس کے شہریوں کی اکثریت نے فرانسیسی دارالحکومت کی سڑکوں پرچلانے کے لیے کرائے پر دستیاب برقی اسکوٹرز کو ہٹانے کے حق میں ووٹ دیا ہے۔

اس ریفرینڈم کے بعد اگست کے آخرمیں 15,000 منی مشینوں کی وسطی پیرس سے غائب ہونے کی توقع ہے۔اُسی ماہ شہری انتظامیہ کی برقی اسکوٹرمہیا کرنے والے تین آپریٹرزکے ساتھ معاہدوں کی میعاد بھی ختم ہوجائے گی۔

سٹی ہال نے اتوار کے روزشہر بھر میں ہونے والے ایک منی ریفرنڈم میں رائے دہندگان سے یہ سوال پوچھا تھا:آپ’’پیرس میں سیلف سروس اسکوٹرز کے حق میں ہیں یا اس کے خلاف؟‘‘

سٹی ہال کے مطابق صرف 103،000 سے زیادہ ووٹروں نے ریفرینڈم میں حصہ لیا۔ان میں 89 فی صد نے ای اسکوٹرکو مسترد کردیا اور صرف 11 فی صد نے اس کی حمایت کی۔ اس ریفرینڈم میں ٹرن آؤٹ بہت کم رہا ہےحالانکہ پیرس میں رجسٹرڈ رائے دہندگان کی کل تعداد13لاکھ80 ہے اور وہ تمام اس میں حصہ لے سکتے تھے۔

پیرس کی میئر این ہڈالگو نے اس مشاورتی ریفرنڈم کو کامیاب قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس کے نتائج بہت واضح ہیں۔انھوں نے کہا کہ یکم ستمبر سے پیرس میں سیلف سروس اسکوٹر نہیں ہوں گے۔

پیرس بھر میں، ڈاؤن لوڈ کے قابل ایپ کے ساتھ تلاش اور کرایہ پردستیاب آسان اور نسبتاً سستے اسکوٹر سیاحوں میں بہت مقبول ہیں۔وہ ان پرآزادی سے شہربھرمیں گھوم پھر سکتے ہیں۔

برقی اسکوٹروں کو پیرس میں پانچ سال قبل متعارف کرایا گیا تھا اور یہ مشترکہ کاروں اور مشترکہ سائیکلوں کے بعد کرایے پر دستیاب ایک سستی سواری ہیں۔یہ پیرس کے ان باشندوں میں بھی مقبول ہیں جومیٹرو ور دیگر عوامی نقل وحمل سے بچنے کے آپشن کا انتخاب کرتے ہیں۔

لیکن پیرس کے بہت سے لوگ شکایت کرتے ہیں کہ برقی اسکوٹرزٹریفک کے لیے خطرہ ہیں اور ان چھوٹی گاڑیوں کی وجہ سے سیکڑوں حادثات پیش آچکے ہیں۔ان میں بعض مہلک حادثات بھی شامل ہیں۔

ہڈالگو اور ان کے کچھ معاونین نے اگلے سال اولمپک کھیلوں کی میزبانی سے قبل حفاظت،عوامی پریشانی اور ماحولیاتی لاگت سے فائدہ اٹھانے کی بنیادپر کرائے پردستیاب اس فلوٹیلا کو ختم کرنے کی مہم چلائی ہے۔کہا جاتا ہے کہ ان اسکوٹرز کو ان کے کرایہ دارمرضی سے لیتے ہیں اور شہربھرمیں چھوڑدیتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں