سعودی عرب میں تاریخی مساجد کی بحالی کا سفر، مسجد ’’الفویھی‘‘ بھی نئی ہوگئی

شہر ’’سکاکا‘‘ کی مسجد شہزادہ محمد بن سلمان کے منصوبے کے دوسرے مرحلہ کی 30 مساجد میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب میں شہزادہ محمد بن سلمان کے ’’ تاریخی مساجد کی بحالی منصوبے‘‘ کے دوسرے مرحلے میں ملک کے 13 خطوں میں موجود 30 مساجد کو تعمیر اور تزئین و آرائش کے بعد بحال کیا جارہا ہے۔ اسی ضمن میں الجوف ریجن کے شہر ’’سکاکا‘‘ کی تاریخی مسجد ’’ الفویھی‘‘ کو بھی تزئین و آرائش کرکے بحال کیا جارہا ہے۔

مسجد ’’ الفویھی‘‘ کی شیڈنگ کو تمارسک کی لکڑی اورکھجور کے پتوں سے بحال کیا گیا۔

اس مسجد کی بحالی کے لیے احتیاط سے منصوبہ بندی کی گئی اور تعمیراتی مداخلتوں کے ایک سیٹ کے مطابق بحالی کی جارہی ہے۔ اس کو اصل صورت میں بحال کیا جارہا تاکہ یہ 1380 میں اپنی اصل تعمیر کے مطابق ہوجائے۔ سایہ فراہم کرنے کے لیے بنائی جانے والی شیڈنگ کو روایتی انداز میں ہی بحال کیا جا رہا ہے۔ اس شیڈنگ میں مقامی لکڑی اور کھجور کے پتوں کو استعمال کیا جارہا ہے۔ اس سے مسجد کی شہری شناخت کا تحفظ ہورہا۔ یہ منصوبہ سعودی عرب کی اسلامی تہذیب کو فروغ دینے اور تاریخی شہروں اور دیہات کی ترقی میں دلچسپی کی نمائندگی بھی کر رہا ہے۔

مسجد ’’ الفویھی‘‘ کی اہمیت اس وجہ سے ہے کہ یہ سکاکا شہر کی قدیم ترین عمارتوں میں سے ایک ہے۔ اس مسجد کے مالک کی نسبت سے اسے مسجد ’’ شامان‘‘ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ اسے شامان خلف الفویھی نے تعمیر کیا تھا۔ 1430 ہجری میں مسجد کو ایک ٹریفک حادثہ کے باعث نقصان پہنچا تو اسے پرانی حالت میں ہی برقرار رکھا گیا تھا۔ مسجد الفویھی میں اپنے قیام سے لیکر آج پنجگانہ نمازوں کی ادائیگی جاری ہے۔

مسجد الفویھی کی تزئین و آرائش کے بعد اس کا رقبہ 72.33 مربع میٹر سے بڑھ کر 93.98 مربع میٹر ہو جائے گا۔ اس کی گنجائش 28 نمازیوں تک رہے گی۔ خطے کے روایتی انداز میں مٹی کی تعمیر کی تکنیک کا استعمال کرتے ہوئے اسے تعمیر کیا جا رہا۔ مسجد کی تعمیر میں قدرتی مواد کا استعمال کیا جارہا۔ اس خطے کا طرز تعمیر فن تعمیر میں ممتاز اور منفرد ہے۔ اس طرز کی تعمیر میں مقامی ماحول اور گرم صحرائی آب و ہوا سے نمٹنے کی صلاحیت کو بھی سمو دیا جاتا ہے۔

شہزادہ محمد بن سلمان کا ’’ تاریخی مساجد کی بحالی منصوبہ‘‘ چار سٹریٹجک مقاصد پر مشتمل ہے۔ ان مقاصد میں تاریخی مساجد کو عبادت اور نماز کے لیے دوبارہ آباد کرنا، تاریخی مساجد کے تعمیراتی انداز کو بحال کرنا، سعودی عرب کی تہذیبی جہت کو اجاگر کرنا اور تاریخی مساجد کی مذہبی اور ثقافتی حیثیت کو مضبوط بنانا شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں