شوّال کاچاند جمعرات کونظرنہ آنے اورعیدالفطرہفتے کوہونے کاامکان ہے:ماہرینِ فلکیات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب اورمتحدہ عرب امارات کےماہرینِ فلکیات کے مطابق شوال کاچاند جمعرات کو نظر نہ آنے کا کم امکان ہے بلکہ جمعہ کی شام کوکھلی آنکھوں سے نظرآئے گا اور عیدالفطر ہفتے کوہوگی۔

جدہ فلکیاتی سوسائٹی سے تعلق رکھنے والے ماجد ابو زہرہ نے بتایاکہ تکنیکی طورپرچاند جمعرات کی شام کو آسمان پر نظر آئے گا لیکن یہ سورج کی شعاعوں سے روشن نہیں ہوگا اورخصوصی آلات کے بغیر دیکھنا مشکل ہوگا۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کی رپورٹ کے مطابق ابوزہرہ نے مزید کہا کہ اگر آسمان صاف ہو تو چاند کوکھلی آنکھوں سے دیکھنا بہت آسان ہو جائے گا۔

تاہم اگر جمعرات کو چاند نظر آنے کی شہادتیں موصول ہوتی ہیں اورانھیں تسلیم کر لیا جاتا ہے تو حکام جمعہ کو عیدالفطرکا آغاز قرار دے سکتے ہیں۔

اس سے قبل سعودی عرب کی سپریم کورٹ نے مملکت میں لوگوں سے کہا تھا کہ وہ جمعرات کی شام رمضان المبارک کے اختتام کی نشان دہی کے لیے شوّال کا چانددیکھنے کی کوشش کریں۔

ابوظبی کے بین الاقوامی فلکیات مرکز نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ اگر دوربین کا استعمال کیا گیا اور مطلع صاف رہا تو جمعرات کی شام مغربی افریقاکے کچھ حصوں کے علاوہ اسلامی دنیا میں کہیں سے بھی چاند نظر نہیں آئے گا۔

فلکیاتی شواہد وحالات سے پتاچلتا ہے کہ چاند جمعرات کی شام کو نہیں دیکھا جاسکے گا، لیکن یہ ممکن ہے کہ حکام عینی شاہدین کی گواہیوں کو قبول کرلیں گے۔لہٰذاعیدالفطراب بھی جمعہ کو ہوسکتی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ماضی میں ایسے کئی مواقع آئے ہیں جب عیدالفطر کا آغازایسے خاص دن کو ہوا تھا جب شوّال کے چاند کی رؤیت سائنسی طور پرناممکن تھی۔

شوّال کے چاند کے ساتھ ایک فلکیاتی خرابی بھی واقع ہوگی کیونکہ یہ سورج اور زمین کے درمیان سے گذرکرایک نایاب 'ہائبرڈ گرہن' تخلیق کرے گا جو جمعرات کو آسٹریلیا اور انڈونیشیا سمیت جنوبی نصف کرہ کے کچھ حصوں سے نظر آئے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں