سعودی قدیم شہر ’’ الحجر‘‘ میں پہلا ہوٹل رواں برس کے آخر میں کھولنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں ’’رائل کمیشن فار العلا‘‘ (آر سی یو ) نے اعلان کیا ہے کہ تاریخی علاقے العلا کے شہر الحجر میں پہلا ہوٹل ’’ تشیدی الحجر‘‘ 2023 کے آخر میں کھول دیا جائے گا۔

’’تشیدی الحجر‘‘ حقیقی یونیسکو کے عالمی ثقافتی ورثے کے اندر پہلا ریزورٹ ہوگا۔ الحجر کو بڑی حد تک پہلی صدی عیسوی میں ’’نباتین‘‘ بادشاہت نے تعمیر کیا تھا۔ آر سی یو کے مطابق اس ہوٹل کی تعمیر سے زیادہ تر قدیم مقام کی تعمیر سے متاثر نہیں ہوگی۔ ہوٹل ’’ تشیدی الحجر‘‘ میں 35 کمرے ہوں گے اور اسے ہوٹل مینجمنٹ کمپنی جی ایچ ایم چلائے گی۔

آر سی یو ہوٹل میں شہر کے کئی موجودہ تعمیرات کو بھی شامل کر رہا ہے۔ ان مقامات میں 18ویں صدی کا قلعہ اور حجاز ریلوے کا ایک پرانا ٹرین سٹیشن بھی شامل ہے۔ ہوٹل کے مکمل طور پر کام کرنے کے بعد کم از کم 120 ملازمتیں پیدا ہوں گی۔

ہوٹلز اینڈ ریزورٹس کے آر سی یو کے نائب صدر جان نارتھن نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ ’’العلا‘‘ کے زندہ عجائب گھر ہوٹل ’’تشیدی الحجر‘‘ علاقے کے ورثے کو اپنے پائیدار ڈیزائن کی خصوصیات کے ساتھ مجسم کردے گا۔ یہ ایک قابل اعتماد لگژری تجربہ ہوگا جو العلا میں آرام اور ایڈونچر کے متلاشی سیاحوں کو سہولیات فراہم کرے گا اور ان سیاحوں کی خاص منزل بن جائے گا۔

جان نارتھن نے مزید کہا جنرل ہوٹل مینجمنٹ ( جی ایچ ایم) اس پرتعیش ثقافتی ورثہ کے ہوٹل کو متعارف کرانے میں بہت پرجوش ہے۔ سعودی عرب کے پہلے یونیسکو کی عالمی ثقافتی ورثہ کے مقام کے اندر پہلے ہوٹل کے طور پر قائم ’’ تشیدی الحجر‘‘ جدید فن تعمیر سے آراستہ ہوگا اور اس تاریخی مقام کی سالمیت کو بھی برقرار رکھے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں