ٹویٹر کے 3 اکاؤنٹس نے فیس ادا کیے بغیر بلیو ٹک کیسے برقرار رکھی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوٹر کی جانب سے نئی پالیسی کے تحت بغیر ادائی بلیو ٹک کی سروس ختم کر دی گئی ہے، تاہم اس کے باوجود 3 اکاؤنٹس نے تصدیقی سروس ٹویٹر میں حصہ نہیں لیا تھا اس کے باوجود ان کی بلیو ٹک کو برقرار رکھا گیا ہے۔

فیصلے کے نفاذ کے بعد سوشل میڈیا سائٹ کی شکل تیزی سے بدل گئی۔ صارف کی شناخت کی تصدیق کے بعد برسوں پہلے دیے گئے نیلے نشانات کو واپس لے لیا گیا۔

ٹک کا نیلا نشان جسٹن بیبر، کرسٹیانو رونالڈو، بل گیٹس یا لیڈی گاگا جیسی شخصیات کے اکاؤنٹس کے ساتھ ساتھ بہت سے صحافیوں اور کارکنوں کے اکاؤنٹس سے غائب ہو گیا۔اور تو اوران میں ٹویٹر کے بانی جیک ڈورسی بھی شامل ہیں۔

سیاسی زندگی میں کئی عہدے داروں کے اکاؤنٹس سے نیلے رنگ کا توثیقی نشان بھی ہٹا لیا گیا لیکن ان میں سے کچھ کو سرکاری اکاؤنٹس یا بعض اداروں کے لیے سرمئی تصدیقی نشان ملا۔ یہ معاملہ امریکی ایوان نمائندگان کے اسپیکر کیون میکارتھی کے ساتھ بھی ہوا۔

بلیو ٹک سے مراد اب وہ صارفین ہیں جو اس بیج اور دیگر فوائد (اکاؤنٹ کی مرئیت میں اضافہ، ٹیک پرکس، کم اشتہارات) حاصل کرنے کے لیے ماہانہ $8 ادا کرتے ہیں۔ ان میں ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر یا دلائی لامہ شامل ہیں۔

ٹویٹر پر تصدیقی ٹیگ یا "بلیو ٹک" حاملین کی شناخت کی تصدیق کرنے میں مدد کرتا ہے اور انھیں دھوکا بازوں سے الگ کرتا ہے۔ ٹویٹر کے نیلے تصدیقی نظام کے تحت قریباً 300,000 تصدیق شدہ صارفین تھے۔ان میں سے اکثر صحافی، کھلاڑی اور عوامی شخصیات تھیں۔

60 لاکھ فالوورز والے مواد کے تخلیق کار مارکوئس براؤنلی نے ٹویٹ کیا کہ "میں جانتا ہوں کہ مجھے بلیو ٹک رکھنے پر تنقید کا نشانہ بنایا جائے گا، لیکن یہ ٹھیک ہے، مجھے ٹویٹس میں ترمیم کرنے کی ضرورت ہے۔"

دوسروں نے اس قدم پر حیرت کا اظہار کیا جن میں مشہور مصنف سٹیفن کنگ جن کے سات ملین فالوورز ہیں۔

انھوں نے لکھا کہ "میرا ٹویٹر اکاؤنٹ کہتا ہے کہ میں نے ٹویٹر بلیو کے لیے سائن اپ کیا ہے۔ یہ غلط ہے۔ میرا ٹوئٹر اکاؤنٹ کہتا ہے کہ میں نے اپنا فون نمبر (تصدیق کے لیے) دیا ہے۔ ایلون مسک نے ٹویٹ کر کے جواب دیا، "ڈیوٹی کے لیے نہیں شکریہ۔"

ایک اور ٹویٹ میں ٹویٹر کے باس نے نوٹ کیا کہ وہ "ذاتی طور پر کچھ سبسکرپشنز کے لیے ادائی کرتے ہیں۔"

پتاچلا کہ تین مشہور شخصیات نے تصدیقی سروس کے لیے ادائی کرنے سے انکار کے باوجود ٹوئٹر پر ’بلیو ٹک‘ نہیں کھویا۔ یہ کینیڈین اداکار ولیم شیٹنر، باسکٹ بال اسٹار لیبرون جیمز اور امریکی مصنف اسٹیفن کنگ ہیں۔

مسک نے ایک ٹویٹ کا جواب دیا جس میں انھوں نے کہا کہ وہ ذاتی طور پر ٹویٹر پر کچھ اکاؤنٹس کے سبسکرپشنز کو بلیو ٹِکس کے ساتھ تصدیق کے لیے ادائی کرتے ہیں، انھوں نے کہا کہ وہ صرف تین اکاؤنٹس کے لیے ادائی کرتے ہیں۔ان کا تعلق کامیڈین ولیم شیٹنر، باسکٹ بال کھلاڑی لیبرون جیمز اور مصنف سٹیفن کنگ ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں