’الحمد للہ میں اب بہتر ہوں‘ ترک صدر ایردوآن علالت کے بعد پہلی بار اپنے حامیوں میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ کے صدر رجب طیب ایردوآن علالت کے پہلی بار اپنے حامیوں میں آئے۔ ٹیلی ویژن سٹیشنوں سے نشر ہونے والی تصاویر میں انہیں عوام کے درمیان دیکھا جا سکتا ہے۔

ترک صدر رجب طیب ایردوآن صحت کی خرابی کی وجہ سے تین دن تک عوام میں نہیں آسکے۔ وہ پہلی بار کل ہفتے کے روزاستنبول میں ذاتی طور پر نمودار ہوئے۔

ترک صدر کی اپنے حامیوں پر گل پاشی

ترکیہ کے 69 سالہ صدر ایردوآن مسکراتے ہوئے استنبول میں ٹیکنو فیسٹ ایوی ایشن فیسٹیول کے اسٹیج پر پہنچے اور اپنے حامیوں پر پھول پھینکے، جو جھنڈے لہرا رہے تھے۔

ایردوآن نے زور دے کر کہا کہ وہ اس وقت معدے کے انفیکشن میں مبتلا ہونے کے بعد کافی بہتر محسوس کر رہے ہیں۔ ہفتے کو صحت کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اب اللہ کا شکر ہے کہ بہت بہتر ہوں۔

انٹرویو کے دوران اچانک طبیعت بگڑ گئی

خیال رہے کہ منگل کی شام ایردوآن مقامی ٹیلی ویژن چینلز کے ساتھ براہ راست انٹرویو دے رہے تھے جب اچانک ان کی طبیعت خراب ہونے کی وجہ سے انٹرویو روک دیا گیا۔

براہ راست نشریات میں طویل وقفے کے بعد ایردوآن واپس آن ائیر آئے اور کہا کہ "آج مہم میں بہت کام تھا، اس لیے مجھے گیسٹرائٹس ہو گیا، میں نے پروگرام منسوخ کرنے کا بھی سوچا۔ لیکن ہم واپس آ گئے ہیں۔ میں آپ سے اور اپنے ناظرین سے معذرت خواہ ہوں۔"

تاہم، اس طویل وقفے نے ناظرین کو تشویش اور تذبذب میں مبتلا کر دیا، سوشل میڈیا پر بڑھتی ہوئی قیاس آرائیوں کے درمیان لوگ حیران تھے اور جاننا چاہتے تھے کہ ترک صدر کے ساتھ کیا ہوا ۔

اس دوران ترک صدارتی انتخابات میں حزب اختلاف کے واحد امیدوار کمال کلیچ دار اوغلو نے بھی صدر رجب طیب ایردوآن کی جلد صحت یابی کی دعا کی۔

"گڈ" پارٹی کی رہنما میرال اکسینر نے بھی ترک صدر کی جلد صحت یابی کی خواہش کی۔

ایردوآن اپنے حامیوں کے درمیان
ایردوآن اپنے حامیوں کے درمیان

صدارتی ترجمان ابراہیم قالن نے اپنے آفیشل ٹویٹر پیج پر بھی لکھا ہے کہ "ہمارے صدر، خدا کا شکر ہے، خیریت سے ہیں۔"

ترک وزیر صحت فخرالدین کوجا نے وضاحت کی کہ ایردوآن گیسٹرو میں مبتلا ہیں، جو کہ نظام انہضام میں ایک مسئلہ ہے جس کا علاج آسانی سے اور چند دنوں میں کیا جا سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں