امریکہ: سعودی فلم ’’جنون‘‘ نے ہالی ووڈ عرب فلم فیسٹیول میں قدم رکھ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ میں سعودی فلم "جنون" نے ہالی ووڈ عرب فلم فیسٹیول میں شائقین کو مسحور کر کے رکھ دیا۔ امریکہ میں ہونے والا یہ فیسٹیول عرب سنیما کی فراوانی اور تنوع کو ظاہر کر رہا ہے۔ پروڈیوسر نوان ریبیرو نے کہا کہ یہ ایک "زبردست اعزاز" ہے۔

ہالی ووڈ عرب فلم فیسٹیول کے آفیشل سلیکشن میں ’’جنون‘‘ کو شامل کرنا ایک بہت بڑا اعزاز رہا ہے۔ جس وقت ہم برسوں پہلے اپنے کمرے میں اس فلم پر سوچ بچار کر رہے تھے اس وقت ہم نے یہ نہیں سوچا تھا کہ یہ فلم ہالی ووڈ عرب فلم فیسٹول میں پیش کی جائے گی۔ ’’ العربیہ انگلش‘‘ کو اپنے خصوصی انٹرویو میں نوان ریبیرو نے کہا ناقدین کی جانب سے فلم کو سراہا جانا بہت اہمیت کا حامل ہے۔

یہ فلم ایک سعودی بلاگر خالد کی کہانی پیش کرتی ہے۔ بلاگر خالد اپنی بیوی اور بہترین دوست کے ساتھ غیر معمولی واقعات کی فوٹیج حاصل کرنے کے لیے جنوبی کیلیفورنیا جاتا ہے۔ "جنون" کو دو سعودی بھائیوں مان بی اور یاسر بی نے ڈائریکٹ کیا تھا۔ ان دونوں بھائیوں کی پہچان جدت، دلیرانہ کہانی اور ہدایت کاری ہے۔

ربیرو نے بتایا کہ ڈائریکٹرز کے ساتھ کام کرنا بہت اچھا تھا۔ میں مان سے کئی سال پہلے ملا تھا۔ ہم ایک دوسرے کو ایک دہائی سے زیادہ عرصے سے جانتے ہیں۔ ہم اکٹھے کالج گئے۔ لہذا ہم ایک طویل عرصے سے قریبی دوست رہے ہیں۔ یاسر اس کا بھائی تھا اس لیے اس کے ساتھ بھی قدرتی طور پر میرا اچھا تعلق قائم تھا۔ وہ دونوں ایک ساتھ کام کرتے ہیں۔ دونوں ایک دوسرے کے کام کی تکمیل کا باعث بنتے ہیں۔

61
61

ریبیرو نے مزید کہا کہ دونوں بھائیوں نے اپنی ثقافت کو مستند طریقے سے پیش کیا اور بین الاقوامی سطح پر اپنے ملک کی نمائندگی کرنے کے لیے ایک حیرت انگیز کام کیا ہے۔

انہوں نے ’’العربیہ انگلش‘‘ کو بتایا کہ سعودی عرب جانا ایک ناقابل یقین تجربہ رہا ہے۔۔ مجھے وہاں دو مرتبہ جانے کا موقع ملا اور یہ حیرت انگیز تھا۔ سعودی عرب میں ہر کوئی بہت اچھا ہے۔ فلم "جنون" کو 2021 میں ریلیز کیا گیا تھا۔ اسے اس مہینے کے شروع میں Netflix میں شامل کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں