کیا اس نے سجدہ ریز مصری کھلاڑی پر تھوکا تھا؟ ترک فٹ بالر نے خاموشی توڑ دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ کے کھلاڑی کے حوالے سے سوشل میڈیا پر بڑے پیمانے پر اس وقت تنازع کھڑا ہوگیا تھا جب ان پر مصری کھلاڑی محمود حسن " ٹریزیگویٹ " پر تھوکنے کا الزام عائد کردیا گیا تھا۔ اب ترک کھلاڑی اکائیڈن نے اپنی خاموشی توڑ ڈالی اور اس واقعہ پر تبصرہ کیا ہے۔

اکائیڈن نے ٹویٹر پر اپنے آفیشل اکاؤنٹ پر کہا کہ ان کی حرکت میں ہیرا پھیری کی گئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ تھوکنے کی حرکت ایک عام حرکت ہے جو کھلاڑی ہر جگہ فٹ بال میچوں کے دوران کرتے ہیں۔ ترک کھلاڑی نے کہا کہ ان کے خلاف ایک مہم چلائی جا رہی ہے جس کا مقصد ان پر بہتان لگانا اور فٹ بال میں مقابلے اور انسانیت کے جذبے کو آلودہ کرنا ہے۔

انہوں نے کہا جو کچھ ہوا اس کو فلمانے والے کیمرہ نے جان بوجھ کر ایک خاص زاویے سے شاٹ لیا ہے۔ اکائیڈن نے کہا میں ہر اس شخص کا معاملہ خدا کے سپرد کرتا ہوں جو فٹ بال کے مقابلے کو آلودہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے اور ذرائع ابلاغ کی ویب سائٹس پر اس بہتان کو پھیلا رہا ہے۔

خیال رہے گزشتہ چند گھنٹوں کے دوران سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو کلپ پھیلنے کے بعد ترک کھلاڑی اکائیڈن پر بحث کی جا رہی ہے۔ اس ویڈیو کلپ کو جاری کرنے والے ان پر میچ کے موقع پر مصری کھلاڑی ٹریزگویٹ پر تھوکنے کا الزام لگایا ہے۔ ویڈیو کلپ میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مصری کھلاڑی سجدہ ریز ہیں۔ عکادین کے اس عمل نے عوام کو چونکا دیا اور لوگوں نے اس عمل کو غلط قرار دیا۔

ترکی کے ترابزون سپور نے ہفتے کے روز ایک بیان جاری کیا جس میں اکائیڈن کے عمل کی مذمت کی گئی تھی۔ قابل ذکر ہے کہ ٹریزگویٹ نے 80 ویں منٹ میں پنالٹی سپاٹ سے گول کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں