جوتے، ٹیڈی بیئر، اور فلم کے ٹکٹ: مصری نوجوان کے منگیتر سے تحائف واپس مانگنے پر تنازع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر میں ذرائع ابلاغ پر ایک نوجوان کی طرف سے گردش کرنے والی ایک تحریر میں اپنی سابق منگیتر سے منگنی کے دوران دیے گئے تحائف واپس کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔ جس نے بڑا تنازع کھڑا کر دیا۔

حال ہی میں ایک تصویر انٹرنیٹ پر گردش کرنے لگی جس میں اخراجات اور تحائف کی فہرست شامل ہے جو ایک نوجوان نے اپنی منگیتر کو دئیے تھے۔ اس تحریر میں بتایا گیا ہے کہ اس نے منگنی کے دوران کیا خرچ کیا۔ مصری نوجوان نے ساتھ یہ مطالبہ بھی کیا کہ منگنی ختم ہونے کے بعد یہ چیزیں واپس کردی جائیں۔

مصری نوجوان نے دل ٹوٹنے پر جن چیزوں کی واپسی کے مطالبات کیے تھے ان مطالبات کو دیکھ کر لوگوں نے بڑے پیمانے پر حیرانی کا اظہار کیا۔ خاص طور پر اس میں عجیب و غریب تحائف کا ذکر تھا اور انہیں واپس کرنے کا کہا گیا تھا۔ ان اشیا میں کچھ ایسی چیزیں شامل تھیں جیسے مارسا متروہ میں دوپہر کے کھانے کی قیمت، نارنجی جوتے، ایک ٹیڈی بیئر، سینما کی ٹکٹ کی قیمت، منگیر کے گھر جانے پر پیش کئے گئے پھلوں کی قیمت۔

نوجوان نے کاغذ پر مزید لکھا کہ کہ "منگنی کی پارٹی 4000 پاؤنڈ، دلہن کی سالگرہ کی تقریب 1500 پاؤنڈ، ویلنٹائن ڈے پر 450 پاؤنڈ کے تحفے، نئے سال کے موقع پر تحائف اور چاکلیٹوں کا ایک ڈبہ 350 پاؤنڈ، ماتروہ میں ایک لنچ 400 پاؤنڈ، ایک سرخ ٹیڈی بیئر 250 پاؤنڈ، دلہن کے گھر پہلی بار جانے پر پھل 350 پاؤنڈ ، دلہن کے لیے نارنجی جوتے 250، ریو سنیما میں دو کے لیے فلم کا ٹکٹ 40 پاؤنڈ، منگنی کے دوسرے دن مامورا کے تفریحی پارک میں گیمز کا ایک سیٹ کے 130 پاؤنڈ تھے۔ آخر میں منگیتر سے 10 ہزار 840 پاؤنڈز کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

اس نوجوان نے مزید تنازع کھڑا کرنے کے لیے آخری پیراگراف میں یہ بھی کہ دیا کہ جو کچھ باہر نکلنے، چھٹیاں منانے، یا نقل و حمل پر خرچ کیا گیا اسے شمار نہیں کیا گیا۔

اس واقعے نے ایک وسیع بحث اور تنازع کا ایک طوفان کھڑا کر دیا کیونکہ تبصرہ نگاروں نے اس حوالے سے مختلف آرا پیش کیں۔ مصری نوجوان کے حامی اور مخالف دونوں طرح کے افراد سامنے آگئے۔ بعض نے نوجوان سے ہمدردی کا اظہار کیا اور بعض نے اس کے رویے اور طرز عمل کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

نوجوان اور اس کے رویے سے ہمدردی رکھنے والے سے اس حوالے سے ایک دار الافتا کا فتوی بھی سامنے لے آئے۔ جس میں منگنی ختم ہونے پر تحائف واپس کرنے کا حکم معلوم کیا گیا تھا۔

دار الافتاء نے جواب میں کہا تھا کہ خطبہ، فاتحہ پڑھنا، جہیز حاصل کرنا، تحائف حاصل کرنا یہ سب نکاح کے مقدمات میں سے ہیں۔ اگر کسی نے اپنے ارادہ بدل دیا اور عقد مکمل نہ ہوا تو مخطوبہ کو یہ تحائف لینے کا حق حاصل نہیں ہے اور نکاح کا پیغام بھیجنے والا یہ تحائف واپس لے سکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں