ریاض ایئر کی پہلی پرواز آج مشہور سعودی سکائی لائن کے اوپر پرواز کریگی

پہلی پرواز کے لیے سعودی دار الحکومت کی فضاؤں کا انتخاب کیا ہے: نئی ایئر لائنز کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی’’ ریاض ایئر ‘‘ آج اپنا آغاز کر رہی ہے۔ نئی ایئر لائنز نے اعلان کیا ہے کہ اس کی پہلی پرواز کم اونچائی پر سعودی عرب کے مشہور سکائی لائن کے اوپر سے گزرے گی۔ مقامی وقت کے مطابق آج دوپہر ایک بجے پہلی پرواز اڑان بھرے گی اور تین اہم بلند عمارتوں کے اوپر سے گزرے گی۔ یہ تین بلڈنگز کنگ عبداللہ فنانشل ڈسٹرکٹ ، کنگڈم ٹاور اور الفیصلیہ ٹاور ہیں۔

یہ پرواز بوئنگ 787 طیارے کے ڈیزائن کے سامنے آنے کے چند دن بعد کی جارہی ہے۔ ریاض ایئر اپنی پہلی پرواز میں سعودی عرب کو خراج تحسین پیش کرے گی۔

ریاض ایئر کا اعلان ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے مارچ کے مہینے میں کیا تھا۔ توقع ہے کہ ایئر لائن سے غیر تیل کی جی ڈی پی کی ترقی میں 20 بلین ڈالر کا اضافہ ہوگا۔ اس نئی سعودی پرواز کے سامنے آنے سے 2 لاکھ سے زیادہ براہ راست یا بالواسطہ ملازمتیں پیدا ہونے کا امکان ہے۔ یہ کمپنی مکمل طور پر سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ (پی آئی ایف ) کی ملکیت ہے۔ اس کے سی ای او ٹونی ڈگلس ہیں جو پہلے ابوظہبی کے اتحاد ایئرویز کے چیف ایگزیکٹو تھے۔ کمپنی ریاض ایئر نے یہ بھی کہا ہے کہ وہ 2025 میں آپریٹنگ پروازیں شروع کرے گی۔ ا س نئی ایئر لائنز کے آخر کار دنیا میں 100 مقامات سے منسلک ہونے کی توقع کی جارہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں