مصر یا شام ۔۔ مشہور کھانے فلافل کی ابتدا کہاں ہوئی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

گذشتہ روز دنیا بھر میں فلافل کا عالمی دن منایا گیا۔ سوشل میڈیا پر فلافل سے متعلق ہیش ٹیگ کا چرچا رہا اور ہر سال کی طرح صارفین میں اس کھانے کی ابتدا اور تاریخ کے بارے میں گرما گرم بحث چھڑ گئی۔

فلافل عرب دنیا کے مقبول ترین کھانوں میں سے ہے۔

یہ شام میں چنے سے بنایا جاتا ہے جہاں اسے فلافل کہا جاتا ہے، جب کہ مصر میں اسے پھلیوں سے تیار کیا جاتا ہے اور اسے طعمیہ کہا جاتا ہے۔

تاہم اس کی تاریخ اور ابتدا کے بارے میں بہت سے ممالک بالخصوص مصر اور شام میں اختلاف پایا جاتا ہے۔

متعدد نظریات

غالب خیال یہ ہے کہ فلافل کی ابتدا مصر میں ہوئی۔

اخبار "دی گارڈین" کی ایک رپورٹ کے مطابق ، ایک نظریہ کہتا ہے کہ قبطی عیسائیوں نے اسے تقریباً 1000 سال پہلے تیار کیا تھا۔

جبکہ ایک اور نظریے کے مطابق اس کا تعلق فرعونوں کے زمانے ہے اور اس کے بعد یہ شام تک پہنچا۔

فلافل
فلافل

دوسری جانب بعض لوگوں کا خیال ہے کہ فلافل کھانا سب سے پہلے شام میں بنایا گیا اور قرون وسطیٰ میں سب سے پہلے شامیوں کے ہاں اس کا تذکرہ ملتا ہے۔

ایک اور گروہ کا کہنا ہے کہ فلافل پہلی بار فلسطین میں کھایا گیا اور پھر تمام عالم عرب میں پھیل گیا۔

تاہم اس تمام نظریات کی حمایت کے باوجود، فرعونی دور کی تحریروں میں فلافل کی طرز کے کسی کھانے کا کوئی حوالہ نہیں ملتا۔

اور نہ ہی قبطی عیسائیوں کے ہاں فلافل کو گوشت سے پاک کھانے کے طور پر بنانے کا کوئی تذکرہ موجود ہے۔

ان سب نظریات کی تائید کے لیے کوئی ثبوت نہیں ہے۔ اس کے علاوہ لفظ "فلافل" یقینی طور پر قبطی لفظ نہیں ہے۔

ہسٹری ٹوڈے کے مطابق ، ماہرین نے تمام امکانات کا جائزہ لینے کے بعد خیال ظاہر کیا کہ فلافل نسبتاً حالیہ ایجاد ہے، کیونکہ 1882 میں برطانوی قبضے کے بعد تک مصری ادب میں اس کا تذکرہ نہیں ہوا تھا۔

ایک مطالعے نے بحث کو ختم کیا!

2018 میں، لندن میں فلافل فیسٹیول کے دوران، ایک مطالعہ کیا گیا جس نے اس بحث کو ختم کیا اور اس بات کی تصدیق کی کہ فلافل کی بنیاد دراصل مصری ہے۔

فلافل فیسٹیول کا آغاز گلوبل پلس فیڈریشن نے لندن میں کیا تھا ، یہ اقوام متحدہ کی طرف سے منظور شدہ دالوں کے بین الاقوامی سال 2016 کا حصہ ہے۔

فلافل
فلافل

فیڈریشن کی رپورٹ کے ایک مصنف اور ماہرین کے مطابق مصری "فلافل کے بادشاہ" ہیں ۔جسے وہ طعمیہ کہتے ہیں۔

فیسٹیول میں فلافل کی کئی اقسام کا موازنہ کرنے کے بعد مصری فلافل کو پہلے درجے پر رکھا گیا۔

فلافل اگرچہ مشرق وسطیٰ سے آنے والا کھانا ہے لیکن آج یہ پوری دنیا میں معروف ہے۔

یونان، امریکا، سوڈان اور دنیا کے مختلف ممالک میں فلافل ریستوراں ہیں۔

گوشت نہ کھانے والے بھی فلافل کو ترجیح دیتے ہیں اور اسے گوشت کا ایک صحت مند متبادل سمجھا جاتا ہے کیونکہ یہ آئرن اور پروٹین سے بھرپور ہوتا ہے۔

اسے متعدد بین الاقوامی ریستورانوں میں ویجیٹیرین برگر کے طور پر بھی پیش کیا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں