شامی والدین کے جڑواں سیامی بچوں کو علاحدہ کرنے کی سرجری کامیاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ریاض میں شامی والدین کے جڑے بچوں احسان اور بسام کا آپریشن وزارت نیشنل گارڈز کے کنگ عبداللہ سپیشلسٹ ہسپتال میں کامیابی کے ساتھ مکمل ہو گیا۔ ڈاکٹر عبد اللہ الربیعہ کی قیادت میں میڈیکل ٹیم دونوں بچوں کو ایک دوسرے سے علاحدہ کرنے میں کامیاب ہو گئی۔

میڈیکل ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر الربیعہ نے اس سے قبل بتایا تھا کہ آپریشن پانچ مراحل میں مکمل ہو گا۔ شروعات دونوں بچوں کو بے ہوش کرنے سے ہوں گی۔ 26 ڈاکٹروں، نرسوں اور معاونین نے آپریشن میں حصہ لیا۔

ڈاکٹر الربیعہ نے آپریشن کا پہلا مرحلہ شروع کرتے خدشہ ظاہر کیا تھا کہ احسان نامی بچے کا زندہ رہنا مشکل لگتا ہے۔ جسمانی ساخت میں کچھ ایسی خرابیاں ہیں جن کی وجہ سے اس کا زندہ رہنا آسان نہیں۔ اس کے پیشاب کا نظام ناپید ہے۔

ڈاکٹر الربیعہ نے بتایا کہ دونوں بچوں کے جگر کا آپریشن سب سے مشکل ہے کیونکہ دونوں کی شریانیں ایک دوسرے سے جڑی ہیں۔ احسان کے دل میں پیدائشی گڑبڑ ہے۔

یاد رہے کہ احسان اور بسام کو ترکیہ کے انقرہ شہر سے ریاض کے کنگ خالد انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر مئی میں فضائی ایمبولینس کے ذریعے منتقل کیا گیا تھا۔خادم حرمین شریفین شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے دونوں شامی بچوں کے آپریشن کا حکم جاری کیا تھا۔

شامی بچے کے والد نے بتایا کہ بچوں کی ولادت ترکیہ میں ہوئی جہاں وہ ملک کے خراب حالات کے پیش نظر منتقل ہوئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں