’غیر منصفانہ برطرفی‘ پاکستانی نژاد برطانوی صحافی نے سی این این پر مقدمہ کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی نشریاتی ادارے ’’سی این این‘‘ کی سابق رپورٹر اور پاکستانی نژاد برطانوی صحافی صائمہ محسن چینل پر "غیر منصفانہ برطرفی اور نسلی امتیاز" کے لیے مقدمہ دائر کر رہی ہیں، ان کا الزام ہے کہ سی این این نیٹ ورک نے فرائض کی انجام دہی کے دوران ’’زندگی بدلنے والی چوٹ‘‘ لگنے کے بعد ان کی مدد نہیں کی۔

صائمہ محسن 2014 میں بیت المقدس میں ایک رپورٹنگ اسائنمنٹ کے دوران اس وقت زخمی ہو گ‏ئی تھیں، جب ایک کار میں سوار ان کا کیمرہ مین غلطی سے ان کے پاؤں پر چڑھ گیا جس سے ٹشوز کو شدید نقصان پہنچا۔

ان کے لنکڈن پروفائل کے مطابق، وہ چوٹ کے بعد کافی عرصہ"بستر تک محدود" تھیں اور برطانوی اخبار دی گارجئین کی ایک رپورٹ کے مطابق اس وجہ سے ان کو بیٹھنے، کھڑے ہونے اور چلنے یا کل وقتی کام پر واپس آنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

دی گارجئین کی رپورٹ کے مطابق ، انہوں نے چینل سے بحالی کے لیے تعاون اور اپنے لیے متبادل فرائض کی درخواست کی لیکن سی این این نے انکار کر دیا۔

صحافی نے سی این این پر نسل امتیاز کا بھی الزام لگایا۔ صائمہ کے مطابق، انہیں کہا گیا کہ "آپ ویسی نہیں دکھتیں جیسی ہم چاہتے ہیں"۔

حادثے کے تین سال بعد، وہ کہتی ہیں کہ نیٹ ورک نے ان کا معاہدہ ختم کر دیا۔

اس کے بعد صائمہ نے چینل پر دعوی کرنے کا فیصلہ کیا، جس کی سماعت آج (پیر) کو لندن میں ہوگی۔

ٹی وی اور ریڈیو پریزینٹر، صائمہ محسن نے برطانیہ، امریکہ اور ایشیا میں بڑے نیٹ ورکس کے لیے نامہ نگار کے طور پر کام کیا ہے جن میں بی بی سی، سی این این، اور پی بی ایس شامل ہیں۔

انہوں نے ہیلری کلنٹن، ہالی ووڈ اداکار ٹام کروز، سابق پاکستانی وزیر اعظم بینظیر بھٹو، ٹونی بلیئر اور بالی ووڈ کے اداکار امیتابھ بچن سمیت کئی اعلیٰ شخصیات کے انٹرویوز کیے ہیں۔

صائمہ، جو اب اسکائی نیوز کے لیے کام کرتی ہیں، نے ٹوئٹر پر لکھا، ’’ہم میدان میں اپنی جانوں کو خطرے میں ڈالتے ہیں اس اعتماد پر کہ ہمارا خیال رکھا جائے گا۔‘‘ "میں غیر منصفانہ برطرفی، معذوری اور نسلی امتیاز کے لیے مقدمہ کر رہا ہوں۔ سی این این چاہتا ہے کہ میرا کیس ختم کر دیا جائے۔

گارجئین کی رپورٹ کے مطابق، انہیں سی این این پر ہائی پروفائل آن ایئر مواقع دینے سے انکار کیا گیا، اور چینل مینیجرز نے سفید فام امریکی نامہ نگاروں کو نشر کرنے کا انتخاب کیا جب کہ وہ زمین پر لائیو ہونے کے لیے تیار تھیں۔

سی این این نے صائمہ محسن کے الزامات پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ نیٹ ورک نے علاقائی بنیادوں پر اس کے دعوے کو یہ کہہ کر متنازعہ بنایا کہ صائمہ کو لندن میں مقدمہ دائر کرنے کا حق نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں