سعودی عرب: ثقافتی ورثے کے اثاثوں کی 3 ہزار سے زیادہ اشیا کو بحال کردیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

کنگ عبدالعزیز پبلک لائبریری میں ویڈیوز اور تصاویر کی بحالی کے مرکز نے ثقافتی ورثے کے اثاثوں سے متعلق 3 ہزار سے زیادہ نایاب علمی اشیا کو بحال کرنے اور جراثیم سے پاک کرنے میں کامیابی حاصل کرلی ہے۔ ان اشیا میں تصاویر، ویڈیوز، دستاوبز، نقشے، نایاب کتابیں اور مخطوطات کے مجموعے شامل ہیں۔

آٹھ ماہ قبل قائم ہونے والے اس مرکز نے قدیم شہر درعیہ کی نایاب تصاویر کو بحال کیا جس میں چودھویں صدی ہجری کے آغاز میں شہر کے کھنڈرات کو دکھایا گیا تھا۔ اس کے اردگرد کھجور کے سرسبز جنگلات کے علاوہ درعیہ کی حالت اور حیثیت کو اجاگر کیا گیا ہے۔

مرکز نے جدہ شہر کی 415 نایاب تصاویر اور 117 نایاب کتابیں بھی بحال کردی ہیں۔ جن نایاب کتب کو بحال کیا گیا ان میں "مشعل المحمل" ہے جو محمد صادق بیک کی لکھی گئی ایک کتاب ہے۔ یہ کتاب مصری حاجیوں کے سمندری سفر کے بارے میں ہے۔ اس میں قاہرہ سے مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ اور پھر 1881 میں قاہرہ جانے والے " محمل کے سفروں‘‘ کا نقشہ موجود ہے۔

حج کی رسید

مرکز نے سعودی سکوں کا ایک سیٹ بھی بحال کردیا ہے جسے "حج کی رسید" کہا جاتا تھا جو 14 ذی قعدہ 1372 ہجری کو 25 جولائی 1953 عیسوی کی مناسبت سے جاری کیا گیا تھا۔

سعودی مانیٹری ایجنسی نے حج کی رسید کے نام سے معروف اس رسید کو جاری کیا تھا۔ دس ریال کی قیمت کی پیشکش کے ساتھ اس رسید کو شروع کیا گیا تھا۔ 5 ملین رسیدیں ابتدائی پرنٹنگ کے طور پر چھاپی گئیں جن پر عربی اور انگریزی دونوں زبانوں میں متعدد جملے لکھے گئے تھے۔ کاغذ کے ہلکے وزن کے لیے اسے حجاج کرام کی طرف سے خوب پذیرائی ملی تھی۔

بحالی مرکز کی نایاب کتابوں، دستاویزات اور پرانے رسالوں میں دلچسپی ہے اور مرکز نے خراب شدہ مواد کو ان کی معمول کی حالت میں واپس لانے کے عزم کر رکھا ہے۔ مرکز نے اسی ضمن میں 615 سے زیادہ نادر دستاویزات کو بحال کیا ہے۔

2 ہزار 235 نقشوں کی بحالی

دریں اثنا مرکز نے 2 ہزار 235 نایاب اور قیمتی نقشوں کو ان کی بحالی اور تحفظ کی تیاری میں جراثیم سے پاک کیا ہے۔ ان نقشوں میں سب سے نمایاں ہیں: براعظم افریقہ اور جزیرہ نما عرب کا نقشہ ہے جو ابراہام اورٹولیئس نے 1570 میں بنایا تھا۔ 1564 میں جزیرہ نما عرب پر مشتمل بطلیموس کا نقشہ اور 1554 میں بنایا گیا جیاکومو جسٹ کا نقشہ بھی موجود ہے۔

واضح رہے اس مرکز کا افتتاح 2022 میں کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں