والد سے تنازع کا غم، ترک شیف کھانے کا برتن اٹھانے میں ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ کے معروف شیف بوراک اوزدیمیر کا اپنے والد سے تنازع عروج پر ہے اور اس حوالے سے مسلسل خبریں میڈیا کی زینت بن رہی ہیں کہ اسی دوران بوراک کے حوالے سے ایک نئی انداز کی خبر سامنے آگئی۔ ترک شیف پہلی مرتبہ انگور کے پتوں سے بنے کھانے کے برتن کو اٹھانے میں ناکام ہوگئے۔ اس سے قبل وہ اس کام میں مہارت رکھتے تھے۔

کھانے کی ڈش کا بڑے پتیلے کو اٹھانے یا پھیرنے میں ناکامی پر سوشل میڈیا پر ان کے پیروکاروں نے کہا ہے ک حالیہ تنازع کی وجہ سے بوراک کو نفسیاتی اور صحت کے دیگر مسائل کا شکار ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے وہ اپنے روز مرہ کے کام کو انجام دینے میں بھی مشکل کا شکار ہو رہے ہیں۔

واضح رہے بوراک کا اپنے والد کے ساتھ تنازع چل رہا ہے۔ انہوں نے اپنے والد کے خلاف مقدمہ دائر کر رکھا ہے۔ انہوں نے والد پر الزام لگایا کہ ان کے علم میں لائے بغیر ان کے نام کو غیر ملکی تاجر کو فروخت کردیا گیا۔

سوشل میڈیا پر بوراک کے بہت سے فالوورز نے یہ بھی کہا کہ برتن کا سائزبڑا تھا جس کی وجہ سے وہ اس کی منتقل کرنے میں ناکام ہوگئے۔ یہ ناکامی ان کو لاحق نفسیاتی مسائل کی نشاندہی نہیں کرتی۔

قبل ازیں ’’سی زیڈ این بوراک‘‘ ریسٹورنٹ چین کے مالک بوراک اوزدیمیر کے والد نے اپنے بیٹے کو جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ ان کے بیٹے نے فروری میں آنے والے زلزلہ کے متاثرین کی مدد صرف پروپیگنڈے اور نفع کمانے کے لیے کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں