سعودی خواتین کے لیے کمپنی بورڈ آف ڈائریکٹرز میں شامل ہونے کے مواقع بڑھ رہے: اکانومسٹ

مختلف شعبوں میں عالمی مہارت کو راغب کرنا مملکت کے برآمدی منصوبوں کے لیے فائدہ مند ہے: محمد الترک کا العربیہ کو انٹرویو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

دبئی میں "ہائیڈرک اینڈ سٹرگلز" کے ایک پریکٹس ممبر اور ’’گلوبل انڈسٹریل پریکٹس‘‘ کے ایک رکن محمد الترک نے کہا کہ 2022 میں سعودی کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے ممبران کی تقرری کے رجحانات کی توجہ بورڈ کے آزاد ممبران پر مرکوز تھی۔ اس طرح گزشتہ برس 2021 کے 53 ممبران کے مقابلے میں پچھلے سال 50 نئے ممبران کی تقرری دیکھنے میں آئی۔

’’العربیہ‘‘ کے ساتھ ایک انٹرویو میں محمد الترک نے بورڈ کے ممبران کے لیے سعودی مارکیٹ میں کمپنیوں کی طرف سے مانگ میں اضافے کا اشارہ کیا جن کے پاس بورڈ کی رکنیت کا سابقہ تجربہ ہے تاکہ بورڈ میں قدر میں اضافہ ہو۔

انہوں نے وضاحت کی کہ "Hydrik & Struggles" کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں قابل ذکر نکتہ یہ ہے کہ جن لوگوں کو آزاد ممبر کے طور پر تعینات کیا گیا تھا ان میں سے 48 فیصد سابق سی ای اوز تھے۔ کمپنیاں ان لوگوں کو اہمیت دے رہی ہیں جن کے ایگزیکٹوز کے طور پر کامیابی کا ریکارڈ ہے۔ ارکان کے تنوع اور ممبر شپ کی تقرریوں میں خواتین کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں 8 سے 10 فیصد تک خواتین آ گئی ہیں۔ یہ ایک اچھی بات ہے۔

سعودی عرب میں آبادی کا 40 فیصد حصہ خواتین پر مشتمل ہے۔ انہوں نے کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں سعودیوں کی تعداد میں 90 فیصد سے 84 فیصد تک کمی کی طرف اشارہ کیا۔

انہوں نے وضاحت کی کہ کمپنی ’’ہائیڈرک اینڈ سٹرگلز‘‘ 70 سال سے زیادہ عرصہ سے مارکیٹ سٹڈیز کر رہی ہے۔ اس کا خیال ہے کہ اس وقت سعودی مارکیٹ میں کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں ممبر شپ کی تقرریوں کے حوالے سے جو کچھ ہو رہا ہے وہ بہت حوصلہ افزا اور مثبت ہے۔ یہ رجحان خاص طورپر سعودی معیشت کی ترقی کے لیے بہتر ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جب بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اندر خیالات، پس منظر اور تجربات کی کثرت ہوتی ہے تو اس سے کمپنیاں نہ صرف مملکت کے اندر بلکہ علاقائی اور عالمی سطح پر بھی ترقی کرتی ہیں۔ سعودی عرب تک پہنچنے کے لیے بہت بڑے عزائم ہیں۔

عالمی سطح پر کئی شعبوں میں اعلیٰ درجے کی مہارت رکھنے ولے پرانے ہوں یا نئے افراد سعودی عرب تک پہنچنے کے لیے پر عزم ہوتے ہیں۔ سعودی عرب عالمی مہارت کے حامل لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کرتا ہے۔ سعودی عرب میں کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کا ممبر بننا بہت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ امید کی جاتی ہے کہ سعودی کمپنیوں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی تقرریوں میں تنوع کی رفتار بڑھے ی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں