ماں، بیٹی کو ہراساں کرنیوالے نشے میں دھت مسافر نے ایئر لائنز کو بھی مشکل میں ڈال دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی ایئر لائنز "ڈیلٹا" پر مقدمہ چلایا گیا ہے اور اسے بھاری مالی معاوضہ ادا کرنا پڑ سکتا ہے۔ اس کی وجہ ایک پرواز سوار ایک مسافر کا غیر اخلاقی رویہ بنا۔

برطانوی اخبار ’’ڈیلی میل‘‘ کے مطابق ایک 16 سالہ لڑکی اور اس کی والدہ نے کمپنی کے خلاف مقدمہ دائر کرتے ہوئے کہا کہ انہیں ایک مسافر نے اس وقت ہراساں کیا جب وہ ڈیلٹا کی پرواز میں تھیں۔ مقدمے میں کہا گیا ہے کہ ہراساں کرنے کا یہ واقعہ نیویارک سے یونانی دارالحکومت ایتھنز جانے والے طیارے میں پیش آیا۔

ماں اور بیٹی نے یہ بھی کہا کہ انہیں نشے میں دھت ایک مسافر نے ہراساں کیا۔ اس مسافر نے 11 گلاس شراب پی رکھی تھی۔

اگرچہ دونوں خواتین نے فلائٹ اٹینڈنٹ سے التجا کی کہ وہ نشے میں دھت آدمی کو مزید الکحل دینا بند کر دیں لیکن عملے کی طرف سے ان کے مطالبات کو "سخت نظر انداز" کیا گیا اور فلائٹ اٹینڈنٹ اسے شراب کے جام دیتے رہے۔ یہ سب اس وقت کیا گیا جب وہ بہت نشے میں نظر آ رہا تھا۔

فلائٹ اٹینڈنٹ میں سے ایک نے ابتدائی طور پر ماں کی اس شکایت کا جواب نہیں دیا کہ اس کی بیٹی کو ہراساں کیا گیا تھا اور صرف اسے "صبر" کرنے کو کہا۔

مقدمے کے مطابق اس شخص کی ہراسانی بیٹی پر ہی نہیں رکی بلکہ ماں کو بھی متاثر کرتی ہے۔ طیارہ ایتھنز میں اترنے کے بعد نشے میں دھت مسافر کو پولیس کی طرف سے حراست میں لینے کے بجائے جانے دیا گیا۔ ماں اور بیٹی نے 20 لاکھ ڈالر مالی معاوضے کا مطالبہ کیا۔

دوسری طرف کمپنی کے ایک ترجمان نے کہا کہ اس واقعے پر کوئی تبصرہ نہیں کرتے کیونکہ یہ معاملہ ابھی تک عدلیہ کے ہاتھ میں ہے۔ کمپنی اپنی پروازوں میں ایک مسافر کی طرف سے دوسرے مسافر کے ساتھ جاری کردہ کسی بھی نامناسب رویے کو برداشت نہیں کرتی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں