اعلیٰ قربانی کی مثال: بہن نے موت سے پہلے گرتی گاڑی سے بہن بھائیوں کو باہر نکالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی دوشیزہ ریما مناع راشد کو موسم گرما کی تعطیلات ختم ہونے کے بعد شاہ خالد انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر اپنی نئی ملازمت شروع کرنے کا وقت نہیں ملا اور وہ ایک سفر کے دوران اہل خانہ کو بچانے کی کوشش میں خوفناک حادثے کا شکار ہو کے انتقال کر گئیں۔

بد قسمت خاندان موسم گرما کی تعطیلات کے لیے عسیر کے علاقے میں ایک پرفضا گاؤں حسوہ میں تھا۔ اس ہولناک واقعے کی تفصیلات بتاتے ہوئے ایک قریبی رشتہ دار یحییٰ الجرعی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ ’’یہ سانحہ بہت بڑا اور دلخراش ہے۔‘‘

انہوں نے بتایا کہ حادثے کے دن یہ پورا خاندان جس میں والد دو بھائی اور تین بہنیں شامل تھیں گاڑی پر سوار تھے جب حسوہ کے راستے پر ایک پہاڑی علاقے میں اونچائی پر پہنچنے کی کوشش کے دوران گاڑی اچانک رک گئی۔ اس کے بعد باپ اور بیٹا راشد وجہ جاننے کے لیے گاڑی سے باہر نکلے۔

مگر اچانک گاڑی بے قابو ہو کے نیچے گرنے لگی، 21 سالہ ریما نے فورا گاڑی کا دروازہ کھولا اور اپنی بہنوں کو باہر نکلنے میں مدد کی، اس کے بعد ریما جو کہ خود باہر نکل سکتی تھی مگر اپنے بھائی احمد کو بچانے کی کوشش کرتی رہی۔

اچانک کار قلابازیاں کھانے لگی اور تین سے زیادہ بار الٹنے کے بعد، بھائی احمد گاڑی سے باہر گر گیا جس کے سر پر چوٹ آئی۔ آن ہی آن میں گاڑی نیچے کھائی میں جا گری اور اس میں موجود ریما سر پر چوٹ لگنے سے جان بحق ہو گئيں۔

انہوں نے کہا کہ ریما نے تمام عمر اپنے خاندان کی ذمہ داری نبھائی اور موت کو سامنے دیکھ کے بھی اپنی جان پر کھیل کر انہیں بچاتی رہی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں