سعودی عرب میں تین دماغی مردہ افراد کے اعضاء سے چھ مریضوں کو نئی زندگی ملی!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں اعضاء پیوندکاری سے 6 مریضوں کی جان بچا لی گئی۔

سعودی سینٹر فار آرگن ٹرانسپلانٹیشن کی جانب سے الگ الگ جراحی کے عمل کے ذریعے تین دماغی مردہ افراد کے عطیہ کردہ اعضاء حاصل کرنے کے بعد چھ مریضوں نے نئی زندگی حاصل کی۔

ان میں ایک 43 سالہ مریض کی دل کی پیوند کاری کی گئی جس کا دل تقریبا کام کرنا چھوڑ چکا تھا۔ اس کے علاوہ 14 ، 18 اور 56 سالہ تین افراد میں جگر کی پیوند کاری کے آپریشن، 39 اور 46 سالہ دو افراد میں گردوں کی پیوند کاری شامل تھی۔

سنٹر نے پہلے تینوں دماغی مردہ افراد کے اہل خانہ سے ان کے اعضاء مذکورہ مریضوں کو عطیہ کرنے کے لیے رضامندی حاصل کی۔

شاہ عبدالعزیز میڈیکل سٹی، شہزادہ متعب بن عبدالعزیز ہسپتال اور شاہ سعود میڈیکل سٹی کے منظور شدہ پروٹوکولز نے ان افراد کی دماغی موت کی تصدیق کی اور مریضوں کے لیے اعضاء عطیہ کرنے کی اجازت دی۔

سعودی سینٹر فار آرگن ٹرانسپلانٹیشن کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر طلال القوفی نے وضاحت کی کہ اعضاء کی تقسیم کا عمل طبی اخلاقیات کے مطابق انجام دیا گیا جو منصفانہ تقسیم کی ضمانت دیتا ہے۔

القوفی نے مرنے والوں کے اہل خانہ سے اظہار تشکر کیا جنہوں نے ان مریضوں کو اپنے اعضاء عطیہ کرنے کی اجازت دی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size