جنوبی کوریا: نجی فارم سے فرار ہونے والی شیرنی کو گولی مار کر ہلاک کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پیر کو جنوبی کوریا میں ایک شیر کو ایک نجی ملکیتی فارم سے فرار ہونے بعد گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا۔ فرار کے بعد 100 سے زائد پولیس اہلکاروں نے شیر کی تلاش کی کارروائی کے دوران قریبی کیمپنگ ایریا سے درجنوں کیمپرز کو نکال دیاتھا۔

ساسونی نامی اس شیرنی کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ جنوب مشرقی کاؤنٹی گوریونگ میں صبح 7:30 (2230 جی ایم ٹی اتوار) بجے سے کھلی پھر رہی تھی۔ یونہاپ نیوز ایجنسی نے فارم کے مالک کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ خیال کیا جاتا ہے کہ وہ فارم کے عقبی دروازے سے فرار ہوئی جو کھلا رہ گیا تھا۔

ایک فائر اہلکار نے رائٹرز کو بتایا کہ اس جانور کو تقریباً ایک گھنٹے بعد فارم کے قریب جھاڑیوں میں دریافت کرنے کے بعد حکام نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔

اہلکار نے کہا کہ اسے اس بارے میں کوئی اطلاع نہیں کہ آیا شیرنی سے کوئی خطرہ لاحق تھا یا حکام نے اسے زندہ پکڑنے کے لیے (بندوق کے ذریعے) بے ہوشی کا ٹیکہ استعمال کرنے کی کوشش کی تھی۔

یونہاپ نے رپورٹ کیا کہ فارم نے عوام کو جانوروں کو دیکھنے کے لیے فارم کے دوروں کی پیشکش کی۔

فائر حکام کی جانب سے جاری کردہ تصاویر میں شیرنی کو جھاڑیوں میں چھپا ہوا اور گولی لگنے کے بعد اس کی لاش دکھائی گئی تھی۔

یونہاپ نے رپورٹ کیا کہ حکام نے حفاظتی انتباہ جاری کرتے ہوئے عوام کو مشورہ دیا کہ اگر وہ شیر کو دیکھیں تو ہنگامی ہاٹ لائن پر کال کریں۔ اور پولیس کی تلاشی کے دوران قریبی پہاڑ پر کیمپ کرنے والوں نے مختصر وقت کے لیے ایک قصبے میں پناہ لی۔

شیر حالیہ مہینوں میں جنوبی کوریا میں قید سے فرار ہونے والا تازہ ترین جانور تھا۔

مارچ میں دارالحکومت سیئول کے ایک چڑیا گھر سے ایک زیبرا باہر نکل گیا تھا جسے بعد میں پکڑ لیا گیا۔ اور جنوب مشرقی شہر ڈائیگو کے چڑیا گھر سے بھاگنے والے دو بن مانسوں میں سے ایک گذشتہ ہفتے مر گیا جسے (بندوق کے ذریعے) بے ہوشی کا ٹیکہ لگایا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں