میلان فیشن ویک میں نمائش اور شرکت کے لیے 40 سے زائد سعودی ڈیزائنرز تیار

مملکت میں ڈیزائن کیے گئے کپڑے، زیورات، اور فیشن کے دیگر لوازمات کی 22 تا 25 ستمبر تک نمائش کی جائے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

40 سے زائد سعودی ڈیزائنرز میلان فیشن ویک کے دوران وائٹ میلانو میں اپنی فیشن کی تخلیقات کی نمائش کریں گے جو فیشن کے عالمی منظر نامے کی بین الاقوامی نمائش ہے۔ یہ نمائش پہننے کے لیے تیار آل اراؤنڈ ملبوسات کی کلیکشن کے لیے وقف ہے۔

مملکت میں ڈیزائن کیے گئے کپڑے، زیورات اور فیشن کے دیگر لوازمات 22 اور 25 ستمبر کے درمیان وِسکونٹی پویلین میں ایک ایسے پروگرام میں پیش کیے جائیں گے جو ابھرتے ہوئے عرب ڈیزائنرز اور فیشن کے میدان میں سب سے زیادہ بااثر نمائندوں کے درمیان میٹنگ پوائنٹ کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔

سعودی فیشن کمیشن کے سی ای او برک کاک میک نے کہا کہ "وائٹ میلانو ایونٹ فیشن کیلنڈر میں ابھرتے ہوئے برانڈز کے لیے سب سے اہم ہے جو خود کو منظرِ عام پر لانا چاہتے ہیں۔ چونکہ عالمی سطح پر سعودی فیشن میں صارفین اور سرمایہ کاروں کی دلچسپی بڑھ رہی ہے تو ہمارے ڈیزائنرز خریداروں کے ساتھ بات چیت کرنے اور یہ دیکھنے کے لیے پرجوش ہیں کہ کاروبار کے دلچسپ ترین مواقع کہاں ہیں۔"

تقریب میں سعودی عرب کی شرکت سعودی 100 برانڈز کے منصوبے کے تحت فیشن کمیشن کے تعاون سے منعقد کی جائے گی۔

2021 میں شروع کی گئی یہ سکیم منتخب سعودی فیشن ڈیزائنرز کو ایک سال پر محیط ماسٹر کلاسز، اور ڈیزائن اور اختراع، فروخت کی حکمت عملیوں اور نمائشوں سے متعلق اساتذہ کی روبرو سرپرستی اور ورکشاپس میں حصہ لینے کی اجازت دیتی ہے۔ برانڈز کو مقامی اور بین الاقوامی طور پر فروغ دینے کے لیے یہ انہیں بہترین ٹولز فراہم کرتی ہے۔

یہ کورسز معروف فیشن ہاؤسز کے ماہرین کی ایک بین الاقوامی ٹیم کے ذریعے منعقد کیے جاتے ہیں جن میں ایل وی ایم آئی آئی، کیرنگ، ویلنٹینو، چینل، کالوِن کلین، ٹام فورڈ، بلگری، کیمپر اور ساروفسکی شامل ہیں۔

لندن رائل کالج آف آرٹ، میلان میں بوکونی یونیورسٹی، لندن سکول آف اکنامکس اور ییل یونیورسٹی کے نمائندوں کے بھی لیکچرز ہوتے ہیں۔

اپنے پہلے سال کے دوران سعودی 100 برانڈز نے ڈیزائنرز کو 5,000 گھنٹے سے زیادہ خصوصی رہنمائی اور تربیت فراہم کی۔ پروجیکٹ میں حصہ لینے والے ڈیزائنرز کی عمریں 20-70 سال ہیں اور ان میں 85 فیصد خواتین ہیں۔ زیادہ تر نے دنیا کے بہترین ڈیزائن اسکولوں میں شرکت کر رکھی ہے اگرچہ ان میں سے چند خود آموز ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں