روس کے لونا-25 خلائی جہاز میں ’غیر معمولی صورت حال‘ کی اطلاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس کی خلائی ایجنسی روسکوسموس نے چاند پر لینڈنگ سے قبل خلائی جہاز لونا-25 کی ایک مشق کے دوران میں ’ہنگامی صورت حال‘ کا پتا چلنے کی اطلاع دی ہے۔

روسکوسموس نے ایک بیان میں کہا کہ ’تحقیقی خلائی مشن کو لینڈنگ سے قبل مدار میں منتقل کرنے کے لیے پریشر جاری کیا گیا تھا‘‘۔

اس آپریشن کے دوران میں خودکار اسٹیشن پر ایک ہنگامی صورت حال پیدا ہوئی ، جس نے مقررہ شرائط کے اندرمتحرک ہونے کی اجازت نہیں دی۔

لینڈر کے نام سے قریباً 50 سال میں روس کا یہ پہلا مشن ہے جسے بدھ کے روز ملک کے مشرق بعید میں واقع ووسٹوچنی کاسموڈرم سے لانچ کیا گیا تھا اور اس کے بعد چاند کے مدار میں کامیابی کے ساتھ بھیجا گیا تھا۔

روسکوسموس نے یہ نہیں بتایا کہ آیا اس واقعے سے چاند کے جنوبی قطب پر بوگسلافسکی گڑھے کے شمال میں پیر کو ہونے والی لینڈنگ میں تاخیر ہوگی یا نہیں۔

جون میں روسکوسموس کے سربراہ یوری بوریسوف نے صدر ولادی میرپوتین کو بتایا تھا کہ اس طرح کے مشن ’خطرناک‘ ہیں اور ان کی کامیابی کا امکان قریباً 70 فی صد ہے۔

توقع ہے کہ یہ خلائی جہاز چاند پر ایک سال تک رہے گا، جہاں یہ نمونے اکٹھے کرے گا اور مٹی کا تجزیہ کرے گا۔لینڈر پر نصب کیمرے پہلے ہی خلا سے زمین اور چاند کے دوردراز کے شاٹس لے چکے ہیں۔

روس سوویت یونین کے دور کے خلائی پروگرام کو دوبارہ فعال کرنے اور اس کی تعمیرِنو کی کوشش کر رہا ہے کیونکہ یوکرین کے خلاف جنگ کے بعد مغرب کے ساتھ اس کے طویل عرصے سے جاری خلائی تعاون کا مستقبل شکوک و شبہات کا شکار نظر آتا ہے۔

روس نے کہا ہے کہ وہ اپنے چاند کی تسخیرکے منصوبوں کو آگے بڑھائے گا جبکہ یورپی خلائی ایجنسی نے اعلان کیا ہے کہ وہ یوکرین میں اقدامات پر مستقبل کے مشنوں میں ماسکو کے ساتھ تعاون نہیں کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size