عوامی مقام پر شیر نہلانے کی ویڈیو پر تنقید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

تصور کریں کہ آپ کار واش اسٹیشن پر اپنی گاڑی دھو رہے ہیں اور ایک شیر آپ کو گھور رہا ہے۔

ایسا واقعی ہوا ہے، جیسا کہ سوشل میڈیا پر گذشتہ گھنٹوں کے دوران وائرل ایک ویڈیو میں دیکھا گیا ہے کہ ایک گاڑی ڈرائیور گاڑی کے اندر بیٹھے اپنے شکاری "شیر" کو کار واش میں دھو رہا ہے۔

اگرچہ یہ واضح نہیں کہ یہ ویڈیو کہاں، کسی ملک یا کسی وقت فلمائی گئی ہے، تاہم اس نے بڑے پیمانے پر تنقید کو جنم دیا۔

اس تناظر میں سعودی عرب میں رحمہ سوسائٹی فار اینیمل ویلفیئر کے سرکاری ترجمان حمزہ الغامدی نے کہا ہے کہ حالیہ عرصے میں اس طرح کے لاپرواہی کا رویہ عام ہو گیا ہے۔

انھوں نے العربیہ سے بات کرتے ہوئےکہا کہ شکاری جانوروں کو اس طرح بغیر حفاطتی اقدامات کے عوامی مقام پر لانا لاپرواہی کے زمرے میں آتا ہے جس سے انسانی جانوں کو خطرہ ہوتا ہے۔

شیروں کی افزائش ممنوع ہے

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ شیروں کی افزائش مملکت میں نیشنل سینٹر فار وائلڈ لائف ڈویلپمنٹ کے قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی ہے جس پر 30 ملین ریال تک جرمانہ اور دس سال قید یا ان دونوں میں سے کوئی ایک سزا ہو سکتی ہے۔

انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ کوئی بھی شہری جب کسی بھی شکاری جانور کو قید میں دیکھتا ہے تو اسے چاہیے کہ اسپیشل فورسز فار انوائرمینٹل سیکیورٹی یا نیشنل سینٹر فار وائلڈ لائف ڈیولپمنٹ کو مطلع کرے۔

سعودی عرب نے درندوں اور غیر قانونی جنگلی جانوروں کی اسمگلنگ کو جرم قرار دینے والے ایک بین الاقوامی معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔

انہوں نے تمام شہریوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ خونخوار جانوروں کو نہ پالیں کیونکہ پنجرہ ان کے لیے موزوں جگہ نہیں ہے۔

انہوں نے کہا ان کی جبلت انتباہ کے بغیر انہیں شکار پر اکساتی ہے، چاہے جانور پالتو ہی کیوں نہ ہو۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں