سعودی سکول کی اسمبلی میں چینی زبان میں پرفارمنس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں سکول ریڈیو کے عربی زبان تک محدود ہونے کے بعد الباحہ کے کنگ فہد کے مڈل اور ہائی سکول کے طلبہ نے سکول اسمبلی میں چینی زبان میں پرفارمنس پیش کی۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر ایک ویڈیو کلپ بڑے پیمانے پر پھیل گیا جس میں صبح کی اسمبلی کے دوران متعدد طلبہ چینی زبان میں سکول کا ریڈیو پیش کرتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں جبکہ ایک طالب علم نے تقریر کا ترجمہ بھی کیا۔ اس خیال کو سوشل میڈیا صارفین نے سراہا اور اس کی بھرپور حوصلہ افزائی کی۔

سعودی عرب میں تعلیم کے محکموں نے ثانوی سکول کے دوسرے سال کے طلبہ کے لیے چینی زبان کے فروغ کے پروگرام کو لاگو کرنا شروع کر دیا ہے۔ ثانوی سکول کے دوسرے سال میں ہر سمسٹر میں چینی زبان کی کلاسز رکھی جا سکتی ہیں۔

یہ ایک متنوع افزودگی کی سرگرمی ہے۔ چینی زبان کو فروغ دینے کے لیے مختلف طریقے استعمال کیے جاتے ہیں۔ سکولوں کو تعلیمی پریزنٹیشنز اور انٹرایکٹو اسباق فراہم کئے جاتے ہیں۔ اس حوالے سے سکول میں دستیاب انسانی وسائل میں زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری کی جائے گی۔

دنیا میں معاشی اور ثقافتی سطح پر ایک اہم اور بااثر زبان کے طور پر چینی زبان سیکھنے کا موقع سعودی طلبہ کو بھی فراہم کیا جارہا ہے۔

افزودگی پروگرام کو تعلیمی سال 1445 ہجری کے دوسرے اور تیسرے سمسٹر میں بھی دوبارہ نافذ کیا جائے گا۔ نئی کلاسوں کا انتخاب کیا جائے گا جن میں طلبہ نے پہلے اسی سکول میں افزودگی پروگرام سے فائدہ نہیں اٹھایا وہ اس پروگرام میں شامل ہو سکیں گے۔

واضح رہے سعودی سکولوں میں چینی زبان پڑھانے کی منظوری سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے چینی دارالحکومت بیجنگ کے حالیہ دورے کے دوران دی گئی تھی اور چینی زبان کو سعودی سکولوں اور یونیورسٹیوں کے نصاب میں شامل کرنے کا منصوبہ تیار کرنے کا معاہدہ کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں