لرزہ خیز واردات، ترک ڈاکٹر مریض بچوں کو جنسی زیادتی کے لیے تیار کرنے لگا

ڈاکٹر سلیمان بچوں کو نشہ کراتا، انہیں کے رشتہ داروں سے زیادتی کے لیے اکساتا اور گولن تحریک کے لیے بھرتی کی کوشش کرتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ترکیہ میں ایک انسانیت سوز جرم کی داستان سامنے آگئی جس نے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ حکام نے استنبول میں ایک ڈاکٹر کو گرفتار کر لیا۔۔ اس پر الزام ہے کہ وہ پرائیویٹ کلینک میں بچوں کو نشہ آور اشیا پلانے سمیت متعدد جرائم کرتا تھا۔

سفاک ڈاکٹر بچوں کو نشہ کراتا، انہیں ان کے ہی خاندان کے دیگر افراد سے عصمت دری کرانے پر اکساتا، انہیں نفسیاتی طور پر کمزور کرتا اور فتح گولن کی تحریک میں بھرتی کرنے کی کوشش کرتا تھا۔ پانچ بچوں کی شکایات سامنے آنے پر حکام نے ڈاکٹر کو حراست میں لے لیا۔

ملزم ڈاکٹر کا نام سلیمان ہے جو ایک ماہر تعلیم بھی ہے اور استنبول کی ایک پبلک یونیورسٹی میں لیکچرار تھا ۔ جولائی 2016 کے وسط میں ہونے والی ایردوان حکومت کے خلاف بغاوت کی ناکام کوشش کے بعد اسے ملازمت سے برطرف کر دیا گیا تھا۔ اس کو اس وقت ترکیہ کے مبلغ فتح اللہ گولن کی سربراہی میں ایک گروپ "سروس" میں رکنیت کے الزام میں ایک سال کے لیے قید کیا گیا تھا۔

’’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘‘ کو حاصل معلومات کے مطابق ملزم ڈاکٹر سلیمان استنبول کے علاقے بکیرکوئی اپنے کلینک میں کام کر رہا تھا ۔ اسے 14 ستمبر کو حراست میں لیا گیا ۔ اس سے بچوں کو نشہ آور اشیا پلانے کے الزام میں تفتیش جاری ہے۔ نشہ کرا کر ان بچوں کو ریپ کرنے پر راضی کیا گیا تھا۔ یہ ڈاکٹر انہیں نفسیاتی طور پر متاثر کرنے اور گولن کی تحریک کے لیے بھرتی کرنے کی کوشش کر رہا تھا۔

ابھی تک یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ ملزم کو کس سزا کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اس ڈاکٹر کے خلاف لگائے گئے الزامات نے ترک معاشرے میں شدید غم و غصہ پھیلا دیا ہے۔ مقامی میڈیا میں اس معاملے کی بڑے پیمانے پر کوریج کی جارہی ہے اور اس کی مذمت کی جارہی ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق ڈاکٹر نے بچوں کو بے ہوشی کرنے کے لیے کیٹامائن کا استعمال کیا۔ اس کی وجہ سے بچوں میں سے کچھ کو شیزوفرینیا جیسے مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

ملزم ڈاکٹر کے متاثرین کی تعداد ابھی تک معلوم نہیں ہے تاہم استنبول کے پبلک پراسیکیوٹر کو 5 شکایات موصول ہوئیں۔ بعد میں 7 دیگر بچوں کی شہادتیں بھی سنی گئیں۔ یہ سب بچے اس ڈاکٹر کے پاس علاج کرانے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں