عراق: شادی کی تقریب میں آتشزدگی، دولہا دلہن کو کیا ہوا؟

دولہا اور دلہن کی نفسیاتی حالت بگڑ گئی، اموات سے متعلق متضاد اطلاعات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں شادی کی تقریب میں آتشزدگی سے ہلاکتوں کی تعداد کے متعلق متضاد اطلاعات سامنے آرہی ہیں۔ سوشل میڈیا پر نوبیاہتا جوڑے کے حوالے سے سوالات کی بھرمار ہوگئی۔ لوگ دولہا اور دلہن کی حالت کے متعلق سوالات کرتے رہے۔

نوبیاہتا جوڑے کے قریبی رشتہ دار نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ‎ دلہا اور دلہن بالکل ٹھیک ہیں۔ آتشزدگی کے وقت میں ان کے ساتھ موجود تھا۔ واقعہ کی وجہ سے دونوں کی نفسیاتی حالت بگڑ گئی تھی۔

عراقی وزیر اعظم محمد شیعہ السوڈانی نے نینویٰ گورنری کے الحمدانیہ ضلع میں ایک شادی ہال میں آتشزدگی کے افسوسناک واقعے کے بعد فوری اقدامات کئے۔ انہوں نے اہل صحت کے حکام کو ہدایت کی کہ وہ زخمیوں کو بہتر علاج کی سہولت مہیا کریں۔ آئی سی یو میں بہتر انتظامات فراہم کئے جائیں۔

جاری کردہ بیان کے مطابق وزیراعظم نے نے حکم دیا کہ داخلہ اور صحت کے وزرا کو جائے حادثہ پر موجود رہنا چاہیے۔ امدادی کارروائیوں کی نگرانی کی جائے اور ہر طرح کی مدد کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے۔

انہوں نے ایک فوری تحقیقاتی کمیٹی کی تشکیل کا بھی حکم دے دیا۔ یہ کمیٹی فوری تحقیقات شروع کردے گی اور حادثہ پیش آنے کی وجوہات کا تعین کرنے کے ساتھ غفلت کے مرتکب افراد کو بھی بے نقاب کرے گی۔ اس حادثہ کے تناظر میں اب تک 13 افراد کو حراست میں لیا جا چکا ہے۔

دوسری طرف عراق کی نینویٰ گورنری میں الحمدانیہ قصبے میں شادی ہال میں آتشزدگی کے متاثرین کی صحیح تعداد کے حوالے سے متضاد اطلاعات سامنے آرہی ہیں۔ بعض اطلاعات کے مطابق 120 افراد جاں بحق اور 200 سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں۔ تاہم عراقی محکمہ صحت کے ترجمان کے مطابق آگ لگنے کے اس واقعہ میں اب تک 87 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ سیکیورٹی میڈیا سیل کے مطابق مرنے والوں کی تعداد 93 ہے جن میں ہال کا مالک بھی شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں