مکہ کے گھڑیال ٹاور پر بجلی کوندنے کا منظر سوشل میڈیا کی زینت بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سماجی رابطوں کے مختلف پلیٹ فارمز پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں مکہ کے مشہور گھڑیال برج المعروف کلاک ٹاور پر بجلی کوندنے کا منظر فلم بند کیا گیا ہے

کلاک ٹاور پر بجلی گرنے کا انتہائی خوبصورت منظر دیکھ کر محسوس ہوتا ہے کہ جیسے بجلی نیچے سے اوپر کی طرف شاخیں بناتے ہوئے گئی ہے۔

اس خوبصورت منظر کو سعودی فوٹو گرافر عبد العزیز الحربی اور محمد الهذلی نے اپنے کیمرے سے محفوظ کیا ہے۔

فوٹو گرافر عبد العزیز الحربی نے کہا ہے کہ ’میں نے دیکھا کہ کلاک ٹاور پر مسلسل بجلیاں گر رہی ہیں‘۔

’اس منظر کو محفوظ کرنے کے لیے میں الزاہر محلے کی بلند چوٹی پر گیا جہاں سے میں نے یہ منظر محفوظ کیا ہے‘۔

 مکہ مکرمہ میں کلاک ٹاور پر گرنے والی آسمانی بجلی کیمرے کی آنکھ میں محفوظ
مکہ مکرمہ میں کلاک ٹاور پر گرنے والی آسمانی بجلی کیمرے کی آنکھ میں محفوظ

’ویڈیو بنانے کے بعد اسے سلو موشن پر چلایا گیا تو معلوم ہوا کہ ایسا لگتا ہے کہ بجلی نیچے سے اوپر گئی اور شاخیں بناتے ہوئے غائب ہوگئی‘۔

انہوں نے کہا ہے کہ ’اس سے پہلے بھی کلاک ٹاور پر بجلی گرنے کے متعدد مناظر محفوظ کر چکا ہوں مگر اس کا منظر میں نے پہلے کبھی نہیں دیکھا‘۔

دُنیا کی سب سے بڑی گھڑی

قابل ذکر ہے کہ مکہ گھڑیال دنیا کی سب سے بڑی گھڑیوں میں سے ایک ہے اور اسے پہلی بار رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں 2008ء میں چلایا گیا تھا۔

یہ گھڑی دنیا کی سب سے لمبی گھڑی بھی ہے جس کی لمبائی 40 میٹر اور اونچائی 400 میٹر ہے۔ کلاک ٹاور میں نصب کلاک چار سمتوں سے دکھائی دیتی ہے۔ سامنے سے یہ اس گھڑی کی لمبائی 43 میٹر اور عرض 39 میٹر ہے۔ دنیا کی اس منفرد گھڑی کا وزن 36 ہزار ٹن ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں