بچوں کی تعلیمی کارکردگی بہتر بنانے کے لیے یہ 10 کام کریں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

بچوں کے مستقبل کا انحصار ان کے والدین پر ہوتا ہے۔ تعلیمی رجحان ان خصلتوں میں سے ایک ہے جس پر والدین اثر انداز ہو سکتے ہیں۔ بہتر تعلیمی کارکردگی کی بنیاد بچے کے ابتدائی ترقیاتی سالوں میں رکھی جا سکتی ہے۔ ٹائمز آف انڈیا کی شائع کردہ ایک رپورٹ کے مطابق اپنے بچوں کے ذہنوں میں مطالعہ اور سیکھنے کی محبت پیدا کرنے کے لیے والدین کچھ طریقے اپنا سکتے ہیں۔

1۔ پڑھائی اولین ترجیح

بچوں کو بتایا جائے کہ ان کی پڑھائی کس طرح اولین ترجیح ہے۔ انہیں باور کرایا جائے کہ پڑھائی کم از کم کوئی اچھی نوکری یا کمائی کا ذریعہ بن سکتی ہے۔

2. آسانی اور کام جمع نہیں ہوسکتے

بچوں کو تعلیم حاصل کرنے اور اپنے تعلیمی شعبوں میں سبقت حاصل کرنے کے لیے ایک مستحکم ماحول کی ضرورت ہوتی ہے۔ جس کا مطلب ہے کہ خاندانوں کو ان کے لیے مناسب ماحول فراہم کرنے کے لیے بعض اوقات تعطیلات منسوخ کرنا پڑ سکتی ہیں۔

3. روزانہ مطالعہ کا معمول

جس طرح اپنے دانت صاف کرنا یا نہانا روزانہ کی عادت بنائی جاتی ہے۔ اسی طرح گھنٹوں کو مطالعہ کے لیے وقف کرنے کی عادت بھی اپنانا ہوگی۔ بچوں کو یہ سمجھنا چاہیے کہ انہیں روزانہ کچھ گھنٹے بغیر کسی ناکامی کے خود مطالعہ کے لیے وقف کرنے ہیں۔

4. رہنمائی فراہم کرنا

اس بات پر بھی کافی زور دیا گیا ہے کہ ہمارا طرز زندگی اور طرز عمل ہمارے بچوں کی تشکیل میں کس طرح مدد کرتا ہے۔ اگر والدین نئی چیزیں سیکھتے ہیں اور اپنے بچے کے سامنے پڑھتے ہیں تو بچے کے سنجیدہ مطالعہ کرنے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔

5. حوصلہ افزائی

وہ دن اب نہیں رہے جب بچوں میں چیخ چیخ کر خوف پیدا کرنا ممکن تھا۔ آج کے بچے اپنے مستقبل کے بارے میں بہت زیادہ باشعور اور باخبر ہیں۔ والدین کو پڑھائی کو تکلیف دہ اور بورنگ نہیں بنانا چاہیے۔ آپ اکٹھے بیٹھ کر بچے کو مطالعہ کرنے کی ترغیب دے سکتے ہیں۔

6. قربانی دینا ہوگی

ایک بچہ جو گھر میں اکیلے پڑھ رہا ہو اور یہ دیکھ رہا ہو کہ اس کے والدین باہر گھومنے پھرنے میں اچھا وقت گزار رہے ہیں تواس کے لیے مطالعہ کرنا ایک بھاری کام ثابت ہوسکتا ہے۔ والدین اس کے ارد گرد رہ کر اور ان کی مدد کر کے ماحول کو سازگار بنا سکتے ہیں۔ اس کے لیے والدین کو اپنی باہر جانے کی سرگرمیوں کی قربانی دینا ہوگی۔

7. جائزہ لینے کی روٹین

اس کا جائزہ لینا ضروری ہے کہ بچہ ہفتے کے دوران کیا سیکھتا ہے۔ والدین ہفتے کے دوران سیکھی ہوئی ہر چیز کا جائزہ لینے کے لیے ایک دن مقرر کر سکتے ہیں۔

8. اختتام ہفتہ پر چھٹی

ہفتے کے آخر میں خود مطالعہ کرنے کا بہترین وقت ہوتا ہے کیونکہ بچے سکول کے بعد تھکاوٹ محسوس کرتے ہیں اور ہفتے کے دوران کلاسوں کی مشق کرتے ہیں۔ والدین کو بھی چاہیے کہ وہ ایک واضح ایجنڈا رکھیں اور ہفتے کے آخر میں زیادہ مہمانوں کو مدعو نہ کریں تاکہ اس وقت میں بچوں کے اس اہم وقت کا زیادہ ضیاع نہ ہو۔

9. پڑھنے کی جگہ کی تیاری

بچوں کے لیے ایک صاف اور بے ترتیبی سے پاک مطالعہ گاہ بنانے سے بھی ان کی پڑھائی کی عادت بہتر ہوسکتی ہے۔ اس سے وہ بہت زیادہ خلفشار کے بغیر اچھی طرح توجہ مرکوز کر سکیں گے۔

10. مطالعہ میں مدد

والدین اپنے بچوں کی کفالت کے لیے اپنے سابق اسکول کے تجربات استعمال کر سکتے ہیں۔ نیز بچوں کو ان کے کلاس رومز میں لے جا کر تعلیمی مواد حاصل کرنے میں مدد کرنا بعض اوقات بچے کو سبقت حاصل کرنے کی ترغیب دینے میں معاون ثابت ہوتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں