ٹرمپ کی رئیل اسٹیٹ ایمپائر کو تباہ کرنے کی کوشش کرنے والی لیٹیٹیا جیمز کون ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ پیر کو نیویارک کی عدالت میں اپنے ریئل اسٹیٹ کے اثاثوں کو بڑھانے کے الزام میں پیش ہوئے۔ سابق صدر نے اپنی بے گناہی کی استدعا کی، اور عدالت کے سامنے کہا کہ یہ معاملہ سب سے بڑی "وِچ ہنٹ" مہم کا تسلسل ہے۔ اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ اس کیس میں ان کے خلاف مقدمہ چلانے والا جج بدعنوان ہے۔ نیویارک کی خاتون پبلک پراسیکیوٹر نے مجھے اپنا ہدف بنالیا ہے۔

ٹرمپ نے کہا کہ میری کمپنیوں نے کوئی خلاف ورزیاں نہیں کیں۔ میرے تمام مالیاتی بیانات ترتیب سے ہیں۔ نیویارک میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ انتخابات سے پہلے جان بوجھ کر کیا گیا ہے۔

سابق صدر نے اس بات پر زور دیا کہ کہ پراسیکیوٹر اور جج بدعنوان ہیں۔ بائیڈن اور ریپبلکن امیدواروں پر برتری کی وجہ سے میرا سیاسی طور پر پیچھا کیا جا رہا ہے۔ ٹرمپ نے کہا بائیڈن ملک چلانے کے بارے میں کچھ نہیں سمجھتے، وہ بدعنوان ہیں۔ امریکہ مسلسل ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے۔ آئندہ انتخابات میں مجھے نقصان پہنچانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ مجھے ایذا رسانی کی وجہ صدارت کے لیے میری امیدواری ہے۔ سوال یہ ہے کہ یہ مسائل برسوں پہلے کیوں نہیں بڑھے بلکہ میری انتخابی مہم کے درمیان ہی کیوں بڑھ گئے ہیں؟

سابق امریکی صدر نے نیویارک کی عدالت میں اپنی پیشی سے قبل اٹارنی جنرل لیٹیٹیا جیمز پر حملہ کیا اور انہیں "کرپٹ" قرار دیا۔ انہوں نے انتخابات میں مجرمانہ مداخلت کا الزام لگاتے ہوئے لیٹیٹیا جیمز کی برطرفی کا بھی مطالبہ کردیا۔

اٹارنی جنرل لیٹیا جیمز کون ہیں؟

جیسا کہ باضابطہ ویب سائٹ پر بتایا گیا لیٹیا جیمز افریقی نژاد ہیں۔ وہ 1958 میں بروکلین نیویارک میں پیدا ہوئیں۔ اس نے اپنے بچپن میں نیویارک کے پبلک سکولوں میں تعلیم حاصل کی، واشنگٹن ڈی سی میں ہاورڈ یونیورسٹی اور نیو میں کولمبیا یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کی۔ وہ 1989 سے نیویارک میں قانون کی پریکٹس کر رہی ہیں۔

وہ ٹرمپ کے دس سال بعد نیویارک شہر کے کوئنز محلے میں پیدا ہوئیں۔ یہ وہی محلہ ہے جہاں سابق امریکی صدر پیدا ہوئے۔ لیٹیٹیا جیمز نے اٹارنی جنرل بننے کے لیے 2018 کے انتخابات میں کامیابی حاصل کی۔ انہوں نے اس عہدے کے لیے 3 دیگر امیدواروں کو شکست دی۔

لیٹیٹیا جیمز نے 2019 سے ٹرمپ آرگنائزیشن اور سابق صدر کے خاندان کے کاروباری طریقوں کی چھان بین جاری رکھنے میں کسی ہچکچاہٹ کا مظاہرہ نہیں کیا ہے۔ وہ ماہ بہ ماہ ایسی مالیاتی رپورٹیں ظاہر کرنے میں کامیاب رہی ہیں جن کے بارے میں تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ یہ رپورٹیں سابق صدر کے لیے اہم قانونی خطرہ ہیں۔

نیویارک کی اٹارنی جنرل لیٹیٹیا جیمز ٹرمپ کے لیے ایک اور کانٹا بن گئی ہیں کیونکہ وہ ممکنہ طور پر ان کی کمپنی کی جانب سے کیے گئے "رئیل اسٹیٹ فراڈ" کے ایک اہم اور سنگین کیس کی تحقیقات کر رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size